امریکی میوزک بینڈ روس سے نکال دیا گیا

Image caption مقامی میڈیا کے مطابق ہیسل ہوف نے بعد میں اس حرکت کے لیے معافی مانگی

امریکی راک بینڈ ’بلڈ ہاؤنڈ گینگ‘ کی روسی میوزک فیسٹیول میں شرکت پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ گروپ کے ایک رکن نے ایک کانسرٹ میں سٹیج پر روسی جھنڈے کو اپنی پتلون میں ڈال لیا تھا۔

روس کے وزیر برائے ثقافت ولادمیر مرنسکی کا کہنا ہے کہ یہ بینڈ ’احمق‘ ہے اور انھیں ملک سے بھیجا جا رہا ہے۔

واقعے کی ویڈیو میں گروپ کے ایک رکن جیرڈ ہیسل ہوف کو جھنڈا اپنی پتلوں میں آگے کی سمیت سے ڈال کر پیچھے سے نکالتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق ہیسل ہوف نے بعد میں اس حرکت کے لیے معافی مانگی تھی۔

یہ واقعہ اکتیس جولائی کو یوکرین کے شہر اوڈیسا میں ایک کانسرٹ کے دوران پیش آیا۔

لوگوں کی تالیوں کی گونج میں ہیسل ہوف نے ان سے کہا ’کوئی پوتن کو نہ بتائے۔‘ اس کے بعد انھوں نے سٹیج پر لگا روسی جھنڈا اپنی پتلون میں ڈال لیا۔ ولادمیر پوتن روس کے صدر ہیں۔

اس سے پہلے بینڈ کے شڈول کے مطابق توقع کی جا رہی تھی کہ یہ بینڈ روس کے جنوبی خطے کراسنودار میں ہونے والے کوبان نامی کبانا میلے تک روس میں رکے گا جو کہ اگست کے پہلے ہفتے ہیں ہوتا ہے۔ تاہم جمعے کے روز سے ان کی تمام مصروفیات منسوخ کر دی گئی ہیں۔

ولادمیر مرنسکینے ٹوئٹر پر کہا ’میں نے کراسنودار میں حکام سے بات کر لی ہے۔ بلڈ ہاؤنڈ گینگ واپس جا رہا ہے۔‘

انھوں نے کہا ’یہ احمق کوبان میں شریک نہیں ہوں گے۔‘

میلے کے منتظم نے گازیٹا نامی روسی ویب سائیٹ کو بتایا کہ ’ہم یہاں موسیقی سننے اور دوست بنانے آئے ہیں۔ ہم کسی کو کسی بھی ملک کے لوگوں کی بے عزتی نہیں کرنے دیں گے۔‘

مقامی میڈیا کے مطابق جیرڈ ہیسل ہوف سے پولیس نے بھی پوچھ گچھ کی ہے۔

بلڈ ہاؤنڈ گینگ نوے کی دہائی میں بنا تھا اور یہ بینڈ استعال انگیز اور جنسی نوعیت کے گانوں کی وجہ سے معروف ہے۔

اسی بارے میں