مشہور اداکار دلیپ کمار ہسپتال میں، حالت مستحکم

Image caption اتوار کی صبح سے ہی دلیپ کمار بے چینی محسوس کر رہے تھے

ممبئی میں لیلا وتی ہسپتال کے ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ برصغیر کے مشہور اداکار دلیپ کمار انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں ہیں تاہم ان کی حالت مستحکم ہے۔گذشتہ رات اچانک ان کی طبیعت خراب ہوگئی تھی جس کی وجہ سے ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔

دلیپ کمار کی اہلیہ سائرہ بانو ان کی دیکھ بھال کر رہی ہیں۔

سائرہ بانو نے ہسپتال کے باہر جمع میڈیا کو بتایا کہ یہ خـریں غلط ہیں کہ دلیپ کمار کو دل کا دورہ پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں بے چينی محسوس ہورہی تھی اس لیے انہیں ہسپتال میں داخل کیا گيا۔

دلیپ کمار کی کہانی بیگم کی زبانی

بالی وڈ کی جڑیں اور پشاور

بھارتی ذرائع ابلاغ کی اطلاعات کے مطابق دلیپ کمار ہوش میں ہیں اور پیر کو انہوں نے اپنے اہل خانہ سے بات چيت بھی کی ہے۔

اس سے قبل سائرہ بانو کے مینیجر مرشد نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ اتوار کی صبح سے ہی دلیپ کمار بے چینی محسوس کر رہے تھے۔

’اس کے بعد سائرہ بانو انہیں گھر کے نزدیک باندرا میں موجود ليلاوتي ہسپتال لے گئیں۔ دلیپ کمار کی حالت کو دیکھتے ہوئے ڈاکٹروں نے انہیں ہسپتال میں داخل کر لیا۔‘

دلیپ کمار فی الحال ڈاکٹروں کی نگرانی میں ہیں اور ان کے طبی ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔

90 سالہ دلیپ کمار اپنی اہلیہ سائرہ بانو کے ساتھ باندرہ کے پالی ہل علاقے میں رہتے ہیں۔

دلیپ کمار کا شمار بالی وڈ کے نامور فنکاروں میں کیا جاتا ہے۔ لوگ انہیں اداکاری کا دبستان کہتے ہیں۔ فلموں میں ان کی جذباتی اداکاری کے لیے انہیں ’شہنشاہ جذبات‘ کا خطاب ملا تھا۔

ان کی اداکاری کے لیے انھیں کئی اعزازات و انعامات سے نوازا گیا۔ پچاس اور ساٹھ کے عشرے میں وہ فلم انڈسٹری پر چھائے ہوئے تھے۔

دلیپ کمار کا اصل نام محمد یوسف خان ہے۔ وہ 11 دسمبر 1922 میں پاکستان کے شہر پشاور میں پیدا ہوئے تھے۔ دلیپ کمار کا فلمی کیریئر چھ دہائیوں پر مشتمل ہے۔ سنہ 1954 میں جب فلم فیئر ایوارڈز شروع ہوئے تو انہوں نے بہترین اداکار کا ایوارڈ جیتا تھا۔

اپنے فلمی کیریئر میں دلیپ کمار نے بہترین اداکاری کے شعبے میں آٹھ فلم فیئر ایوارڈ جیتے۔ سنہ 1991 میں ان کو پدم بھوشن ایوارڈ جب کہ 1994 میں دادا صاحب پھالکے ایوارڈ ملا۔

وہ سنہ 2000 سے 2006 تک راجیا سبھا کے رکن بھی رہے۔ پاکستان نے ان کو 1998 میں نشانِ امتیاز سے نوازا۔

اسی بارے میں