بھارت نے لفٹ کرا دی، عدنان سمیع کے ویزے میں توسیع

Image caption نوٹس میں پولیس نے ان سے یہ بھی جاننا چاہا ہے کہ کیا انہوں نے اپنے ویزے کی توسیع کے لیے درخواست دی ہے

بھارت کی وزارت داخلہ نے پاکستان کے معروف گلوکار عدنان سمیع کے ویزے میں تین مہینے کی توسیع کر دی ہے۔

بھارت میں رہنے کا ان کا ویزا چھ اکتوبر کو ختم ہو چکا تھا اور ممبئی پولیس نے انہیں ببغیر ویزے کے ملک میں ٹھہرنے کے لیے ان سے وضاحت طلب کی تھی ۔

ممبئی کے ڈپٹی پولیس کمشنر سنجے سنترے کے حوالے سے خبر رساں ایجنسیون نے خبر دی ہے کہ وزارت داخلہ نے عدنان کے ویزے میں چھہ اکتوبر سے تین مہینے کی مدت کے لیے توسیع کر دی ہے۔

عدنان نے ویزے کی مدت ختم ہونے سے قبل دلی میں وزارت داخلہ میں توسیع کے لیے درخواست دی تھی لیکن ویزا ختم ہونے کے بعد بھی وزارت کی طرف سے کوئی جواب نہیں آیا تھا۔

ممبئی پولیس نے عدنان کو منگل کو نوٹس دیا تھا۔ عدنان نے میڈیا کے نام جاری کیے گئے ایک پیغام میں کہا تھا ’میں نے مسلمہ ضابطے کے تحت 14 ستمبر کو اپنے ویزے میں توسیع کی درخواست دلی میں وزارت داخلہ کی متعلقہ محکمے میں جمع کرائی تھی ۔ اس ضابصے پر تمام غیر ملکیوں کو عمل کرنا ہوتا ہے اور میں اس پر گزشتہ چودہ برس سے عمل کر رہا ہوں ۔ اور اس بار بھی کیا ہے۔‘

ضابطے کے تحت وہ ویزا ختم ہونے کے بعد توسیع ہونے تک ملک سے باہر نہیں جا سکتے تھے۔

معروف گلوکار کے ویزے کی مدت ختم ہونے کی بات ممبئی میں ان کی سابقہ بیوی سے ایک فلیٹ کی ملکیت کے ایک مقدمے کی سماعت کے دوران سامنے آئی تھی۔

ہندو قوم پرست جماعت مہاراشٹرنو نرمان سینا اور شیو سینا نے عدنان کو بھارت سے فورآ چلے جانے کی وارننگ دی تھی۔

عدنان ایک عرصے سے بھارت میں مقیم ہیں اور یہاں فلم اور موسیقی کی دنیا میں انہیں کافی مقبولیت حاصل رہی ہے۔

پولیس نے عدنان کو نوٹس میں یہ پوچھا تھا کہ کیا انہوں نے اپنے ویزے کی توسیع کے لیے درخواست دی ہے۔ عدنان کو نوٹس کا جواب دینے کے لیے ایک ہفتے کا وقت دیا گیا تھا۔

عدنان سمیع کئی برس سے بھارت میں رہ رہے ہیں۔

عدنان کا ممبئی کے ایک فلیٹ کی ملکیت کے حوالے سے اپنی سابقہ بیوی صبا گالادری کے ساتھ مقدمہ بھی چل رہا ہے۔

دوسری جانب مہاراشٹر کی ہندو قوم پرست جماعت شیو سینا نے عدنان سمیع سے کہا تھا کہ وہ فوراً بھارت چھوڑ دیں۔

عدنان نےگزشتہ سنیچر کو شیو سینا کے ایک رہنما سے ملاقات کی تھی اور ان سے اپنے ویزے کے سلسلے میں تعاون کی درخواست کی تھی۔

یاد رہے کہ شیو سینا پاکستانی فنکاروں، گلوکاروں اور کھلاڑیوں کے بھارت میں آنےجانے کے خلاف ہے۔

اسی بارے میں