قطری شہزادی آرٹ کی دنیا کی سب سے بااثر شخصیت

Image caption شیخہ المیاسہ عوامی سطح پر زیادہ جانی پہچانی شخصیت نہیں ہیں

خلیجی ریاست قطر کی شہزادی کو ایک جائزے میں جدید آرٹ کی دنیا کی سب سے بااثر شخصیت قرار دیا گیا ہے۔

شیخہ المیاسہ بنت حمد بن خلیفہ الثانی قطر میوزیم اتھارٹی کی سربراہ ہیں اور آرٹ ریویو میگزین کا کہنا ہے کہ ان کی سربراہی میں اس ادارے نے دنیا بھر سے فن پاروں کی نیلامی میں بھرپور طریقے سے حصہ لیا ہے۔

گذشتہ برس اس سروے میں شیخہ المیاسہ کو گیارہویں نمبر پر رکھا گیا تھا اور وہ دو برس قبل ہی پہلی مرتبہ اس سروے میں شامل کی گئی تھیں۔

شیخہ المیاسہ قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی کی بہن ہیں۔ شیخ تمیم نے رواں برس جون میں اپنے والد کی جگہ ریاست کے امیر کا عہدہ سنبھالا ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ عوامی طور پر زیادہ مشہور نہ ہونے کے باوجود قطری خاتون کے لیے جدید آرٹ کی دنیا کی بااثر ترین شخصیت کا اعزاز اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ قطر دنیا میں کتنی تیزی سے اہم مقام حاصل کر رہا ہے۔

نامہ نگار ونسٹن ڈوڈ کے مطابق اس کی بنیادی وجہ اس شعبے میں قطر کی جانب سے خرچ کی جانے والی رقم ہے۔

ایک اندازے کے مطابق قطر کی میوزیم اتھارٹی دنیا سے فن پارے اور مجسمے خریدنے پر ہر برس تقریباً ایک ارب ڈالر خرچ کر رہی ہے اور اس رقم کا بڑا حصہ جدید زمانے کے آرٹ اور اسلامی فن پاروں کے حصول پر خرچ ہو رہا ہے۔

قطر میں جدید آرٹ کا عجائب گھر دوحہ میں مطاف عرب میوزیم آف ماڈرن آرٹ کے نام سے قائم ہے اور قطری حکام اپنے ملک کو دنیا میں آرٹ کے حوالے سے وہی مقام دلوانے کے لیے کوشاں ہیں جو آج کل لندن اور نیویارک کو حاصل ہے۔

اسی بارے میں