جو کچھ بھی ہوں’بوبی‘ کی وجہ سے ہوں: ڈمپل کپاڈیا

Image caption فلم بوبی 40 سال قبل سنہ 1973 میں ریلیز ہوئی تھی

سنہ 1973 میں ریلیز ہونے والی فلم ’بوبی‘ کے بعد اس فلم کے ہیرو رشی کپور اور ہیروئن ڈمپل كپاڈيا راتوں رات مشہور ہو گئے تھے۔

راج کپور کی ہدایت کاری میں بننے والی اس فلم کو 40 سال پورے ہو چکے ہیں لیکن آج بھی ڈمپل كپاڈيا کی اداکاری والی فلموں کی فہرست میں اس فلم کا کوئی ثانی نہیں۔

وہ کہتی ہیں: ’میں جو کچھ ہوں بوبی کی وجہ سے ہوں۔ اسی فلم کی وجہ سے میرا وجود ہے۔ 40 برسوں سے اسی فلم کے بل بوتے میرا وجود قائم ہے۔‘

ڈمپل كپاڈيا کی نئی فلم ’واٹ دا فش‘ جلد ہی ریلیز ہونے والی ہے۔ اس فلم کے بارے میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وہ ماضی کی یادوں میں کھو گئیں۔

بابی کی ریلیز کے فوراً بعد انھوں نے اس وقت کے سپر سٹار راجیش کھنہ سے شادی کر لی تھی اور پھر فلموں سے طویل عرصے کے لیے دور ہو گئي تھیں۔

فلم سے دوری کا یہ عرصہ تقریبا 11 سال پر محیط تھا۔ اس کے بعد فلم ’سمندر‘ سے انھوں نے فلموں میں واپسی کی۔ اس فلم میں انھوں نے رشی کپور اور کمل ہاسن کے ساتھ کام کیا تھا۔ اس کی ہدایت رمیش سپّي نے دی تھیں۔

اگر انھوں نے فلموں سے بریک نہ لیا ہوتا تو کیا ان کا کریئر کچھ اور ہی ہوتا؟ اس سوال کے جواب میں ڈمپل نے کہا: ’ہو سکتا ہے میں ان دس گیارہ سالوں میں کام کر کے ختم ہو چکی ہوتی، اس لیے مجھے کوئی افسوس نہیں ہے۔ اس دوران میں نے خانگي زندگی کی ذمہ داریوں کو ادا کیا۔‘

تاہم، انھوں نے یہ ضرور تسلیم کیا کہ جب وہ فلموں میں واپس لوٹيں تو مقابلہ کافی سخت ہو چکا تھا۔

انھوں نے ہنستے ہوئے کہا: ’اس وقت تک سری دیوی بالی وڈ میں چھا چکی تھیں۔ انھوں نے میرے لیے کچھ چھوڑا ہی نہیں۔‘

ڈمپل نے یہ بھی تسلیم کیا کہ انھوں نے راج کپور جیسے ہدایت کار کے ساتھ اپنا کریئر شروع کیا، لیکن اس کے بعد جب وہ دوبارہ لوٹيں تو وہ فلموں کا بے حد خراب دور تھا۔

انھوں نے کہا: ’راج کپور جیسے جینیئس ڈائریکٹر کے ساتھ کام کرنے کے بعد 1980 کے دور میں کام کرنا بہت تکلیف دہ تھا۔ چار سین، اس کے بعد دو گانے۔ ڈائریکٹروں کا بغیر سوچے سمجھے ایکشن کہنا اور بغیر سوچے سمجھے کٹ کہہ دینا۔‘

ڈمپل كپاڈيا اور ان کے شوہر راجیش کھنہ کو فلم کے شائقین ایک ساتھ پردے پر کبھی نہیں دیکھ پائے۔

دونوں نے ساتھ ساتھ ایک ہی فلم کی شوٹنگ کی جس کا نام تھا ’جے جے شیو شنکر۔‘ لیکن مالی وجوہات کے سبب یہ فلم کبھی ریلیز نہیں ہو پائی۔

ڈمپل نے راجیش کھنہ کے بارے میں ایک دلچسپ بات بتائی:

’ایک دفعہ ان کی طبیعت ٹھیک نہیں تھی۔گھر کے باہر پریس والے کھڑے تھے۔ کاکا جی بالکنی میں جانے لگے تو میں نے ان سے کہا کہ آپ شال اوڑھ لیں اور میرے سن گلاسز لگا لیں۔ اس پر انھوں نے میری طرف مڑ کر دیکھا اور کہا ’اب تم مجھے سكھاؤگي کہ مجھے کیا کرنا ہے؟‘ ان جیسا سپر اسٹار آج تک نہیں ہوا۔‘

Image caption بوبی کے فوراً بعد انھوں نے اپنے زمانے کے سپر سٹار راجیش کھنہ سے شادی کر لی تھی

اپنے پسندیدہ اداکاروں کے بارے میں انھوں نے کہا: ’کمل ہاسن مجھے پسند ہیں، رشی کپور میرے سب سے پسندیدہ ساتھی اداکار ہیں۔ مجھے سیف علی خان اور بومن ایرانی بھی پسند ہیں۔‘

ڈمپل كپاڈيا سنہ 2001 میں ریلیز ہونے والی فلم ’دل چاہتا ہے‘ کو اپنے کریئر کی تیسری اننگز کا اہم موڑ سمجھتی ہیں۔

وہ کہتی ہیں: ’بہت کمال کی فلم تھی اور سیف، عامر اور اکشے کے ساتھ بڑا مزہ آیا۔‘

اسی بارے میں