کولمبیا: گیبریل گارسیا مارکیز ہسپتال میں داخل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گبیریل گارسیا کا شمار ہسپانوی زبان کے بہترین مصنفوں میں کیا جاتا ہے

کولمبیا کے نوبل انعام یافتہ مصنف گیبریل گارسیا مارکیز کو میکسیکو سٹی کے ایک ہسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق 87 سالہ مصنف کا ہسپتال میں پھیپھڑوں اور پیشاب کی نالی میں انفیکشن کا علاج کیا جا رہا ہے۔

گبیریل گارسیا کا شمار ہسپانوی زبان کے بہترین مصنفوں میں کیا جاتا ہے۔

ان کی ناول ’ون ہنڈریڈ ایرز آف سولیٹویڈ‘ (تنہائی کے سو سال)کا شمار ایک ’شہکار‘ میں کیا جاتا ہے۔

سنہ1967 میں لکھے جانے والے اس ناول کی پوری دنیا میں 30 ملین کاپیاں فروخت ہوئیں۔

گارسیا مارکیز جنھوں نے گزشتہ تین دہائیوں سے میکسیکو سٹی کو اپنا مسکن بنایا ہوا تھا کو پیر کی رات دارالحکومت کے جنوب میں واقع نیشنل میڈیکل سائنس اور نیوٹریشن انسٹیٹیوٹ میں داخل کیا گیا۔

میکسیکو کی وزارتِ صحت کی سیکریٹری نے ایک بیان میں کہا ہے کہ گبیریل گارسیا نے علاج کے دوران ردِعمل دیا ہے اور جیسے ہی ان کے علاج مکمل ہو گا انھیں ہسپتال سے ڈسچارج کر دیا جائے گا۔

گارسیا مارکیز آخری بار چھ مارچ کو اپنی 87 ویں سالگرہ کے موقع پر آئے ہوئے صحافیوں کے ساتھ دکھائی دیے تھے۔

انھوں نے اس موقع پر تحائف قبول کیے اور تصاویر کھنچوائیں تاہم انھوں نے صحافیوں سے بات نہیں کی تھی۔

خیال رہے کہ دو سال قبل گیبریئل گارسیا مارکیز کے بھائی جیمی گارسیا نے کہا تھا کہ سنہ 1982 کے نوبل انعام یافتہ ادیب یاداشت کھو رہے ہیں اور انھوں نے لکھنا چھوڑ دیا ہے۔

کولمبیا میں گوبو کے نام سے جانے والے مصنف آج کل میکسیکو میں مقیم ہیں اور گزشتہ چند برس میں انھوں نے کسی عوامی تقریب میں شرکت نہیں کی۔

اسی بارے میں