دبئی میں راک بینڈ کے ڈرمر کو ایک ماہ قید

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کوٹیک نے شراب کے نشے میں ہونے کو تسلیم کیا ہے تاہم باقی الزامات کی تردید کی ہے

متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی میں میڈیا کے مطابق جرمنی کے راک بینڈ ’سکورپیئنز‘ کے ڈرمر کو ایک ماہ قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

میڈیا کے مطابق سکورپیئنز بینڈ کے ڈرمر جیمز کوٹیک جو امریکی شہری ہیں، انھیں ایک ماہ قید مذہب کی توہین، نازیبا اشارے اور شراب کے نشے میں ہونے کے جرم میں دی گئی ہے۔

کوٹیک نے شراب کے نشے میں ہونے کو تسلیم کیا ہے تاہم باقی الزامات کی تردید کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق یہ واقعہ تین اپریل کو دبئی ایئرپورٹ پر اس وقت پیش آیا جب یہ بینڈ ایک کنسرٹ کے سلسلے میں بحرین جا رہے تھے۔

دبئی کے نیشنل اخبار کے مطابق ٹرانزٹ ہال میں شور شرابہ کرنے پر کوٹیک کو گرفتار کیا گیا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ حراست میں لیے جانے پر کوٹیک نے گالم گلوچ کی اور ’غیر تعلیم یافتہ مسلمانوں‘ کے حوالے سے بات کی اور پھر نازیبا اشارہ کیا۔

عینی شاہدین نے عدالت کو بتایا کہ کوٹیک نے چیخ کر کہا کہ وہ کبھی بھی پاکستانی اور افغان مسافروں کے ساتھ سفر نہیں کریں گے۔

گلف نیوز کے مطابق ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کوٹیک نے عدالت کو بتایا: ’میں نے مسلمانوں یا اسلام کی توہین نہیں کی۔ میں ایسا کبھی بھی نہیں کر سکتا حتیٰ کہ نشے کی حالت میں بھی نہیں۔‘

تاہم کوٹیک نے اس بات کا اعتراف کیا کہ انھوں نے شراب پی ہوئی تھی اور عدالت نے ان پر 2000 درہم کا جرمانہ عائد کیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق کوٹیک کو آئندہ چند روز میں رہا کر کے ملک بدر کر دیا جائے گا۔

جرمنی کا یہ بینڈ 1965 میں قائم ہوا تھا اور اب تک 20 البم ریلیز ہو چکے ہیں۔

کوٹیک اس بینڈ میں 1996 میں شامل ہوئے تھے۔

اسی بارے میں