اطالوی راہبہ مقابلۂ موسیقی کی فاتح

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کرسٹینا سکوسیا نے سب سے پہلے مارچ میں ہونے والے ایک ’بلائنڈ آڈیشن‘ میں ججوں کو متاثر کیا تھا۔

یورپی ملک اٹلی میں ایک مقابلۂ موسیقی میں شرکت کی وجہ سے انٹرنیٹ پر شہرت پانے والی نوجوان راہبہ اب اس مقابلے کی فاتح قرار پائی ہیں۔

25 سالہ کرسٹینا کا کہنا ہے کہ ان کے گانے ’خدا کی خوبصورتی‘ کا اظہار ہیں۔

راہباؤں کا مخصوص لباس پہنے اور گلے میں صلیب لٹکائے کرسٹینا سکوسیا نے اپنی فتح پر خدا کا شکر ادا کیا۔

’دی وائس اٹلی‘ نامی پروگرام کی فاتح قرار دیے کے بعد انہوں نے کہا،’میں یہاں اپنی بدولت نہیں ہوں، اس کے لیے میں اوپر والے کی شکرگزار ہوں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’میں یہاں کوئی کیریئر شروع کرنے کے لیے نہیں آئی بلکہ میں ایک پیغام پھیلانا چاہتی ہوں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption اس پروگرام کے دوران سسٹر کرسٹینا نے مقبول گلوکاروں کے ہمراہ بھی پرفارمنس دی

انھوں نے مزید کہا کہ وہ پوپ فرانسس کی کیتھولک چرچ سے کی گئی اپیل پر عمل کر رہی ہیں جس میں عام لوگوں کے زیادہ قربت کے لیے کہا گیا تھا۔

جمعرات کو فائنل سے پہلے انہوں نے اپنی مقبولیت کا کریڈٹ، ’خوشی اور خوبصورت و خالص محبت کے پیغام کی چاہ کو دیا۔‘

میلان سے تعلق رکھنے والی سسٹر كرسٹینا نے کہا کہ وہ بخوشی واپس جا کر اپنے چھوٹے سےگرجاگھر میں بچوں کے ساتھ گانا چاہیں گی۔

کرسٹینا سکوسیا نے سب سے پہلے مارچ میں ہونے والے ایک آڈیشن میں ججوں کو متاثر کیا تھا۔

ججوں کو ان کے حیرت انگیز انتخاب کا پتہ لگنے پر انہوں نے کہا، ’میرے پاس ایک تحفہ ہے اور میں اسے بانٹ رہی ہوں۔‘

پروگرام کے آگے بڑھنے کے ساتھ ساتھ اٹلی کے علاوہ پوری دنیا میں ان کی مقبولیت میں اضافہ ہوتا گیا تھا۔

کرسٹینا کی گلوکارہ ایلیشیا کیز کے گانے ’نو ون‘ کی اس پروگرام میں پیشکش کی ویڈیو یو ٹیوب پر پانچ کروڑ سے زیادہ مرتبہ دیکھی جا چکی ہے۔