راجیش کھنہ: شہرت سے گمنامی کے اندھیرے تک

تصویر کے کاپی رائٹ Junior Mehmood
Image caption راجیش کھنہ نے مسلسل 15 ہٹ فلمیں دے کر کامیابی کا ایسا ریکارڈ قائم کیا جو اب تک نہیں ٹوٹ سکا ہے

بالی وڈ سٹار راجیش کھنہ کی 18 جولائی کو دوسری برسی تھی اس موقعے پر راجیش کھنہ سے وابستہ بعض دلچسپ باتیں اور تصاویر پیش ہیں۔

راجیش کھنہ کو بالی وڈ کا پہلا سپر سٹار کہا جاتا ہے اور انیس سو ساٹھ اور ستر کےعشرے میں انہوں نے جس فلم میں بھی کام کیا وہ باکس آفس پر ہٹ ہوئی۔

ایسا نہیں کہ ان سے پہلے بڑے سٹار نہیں ہوئے۔ دلیپ کمار، دیو آنند اور راج کپور، سب نے مقبولیت کی بلندیوں کو چھوا لیکن فلمی تجزیہ نگار کہتے ہیں کہ جس جنون کا شکار راجیش کھنہ کے چاہنے والے ہوئے، بالی وڈ میں اس کی کوئی نظیر نہیں ہے۔

ان کے کرئیر کا آغاز 1966 میں چیتن آنند کی فلم ’آخری خط‘ سے ہوا لیکن انیس سو 1969 میں ’آرادھنا‘ کی ریلیز کے بعد وہ راتوں رات سٹار بن گئے۔ اس گولڈن جوبلی فلم میں انھوں نے باپ اور بیٹے کا ڈبل رول نبھایا تھا اور ان کا وہ سر کو ایک خاص انداز میں جھٹکنا، وہ منفرد چال، وہ غمگین آنکھیں اور وہ مخصوص ادائیں شائقین کے دلوں میں اتر گئیں۔

اس کے بعد ہٹ فلموں کا ایک ایسا سلسلہ شروع ہوا کہ جس کا زور تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا تھا۔ بالی وڈ میں صرف راجیش کھنا کی گونج تھی اور پروڈیوسر انہیں سائن کرنے کے لیے کسی بھی حد تک جانے کے لیے تیار تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Junior Mehmood
Image caption راجیش کھنہ اور ممتاز کی جوڑی کو فلم ناظرین نے بے حد پسند کیا

فلم ’دو راستے‘، ’خاموشی‘، ’آنند‘ اور ’سفر‘ جیسی فلموں سے انہوں نے ثابت کر دیا کہ وہ کردار کی گہرائی میں بھی اترسکتے ہیں۔

راجیش کھنہ اور ممتاز کی جوڑی نے ’آپ کی قسم‘، ’دو راستے‘، ’دشمن، ’روٹی‘ اور ’سچا جھوٹا‘ جیسی سپر ہٹ فلمیں دیں۔

ان کے ساتھی منوج کمار نے راجیش کھنہ کے بارے میں بی بی سی کو بتایا: ’راجیش کھنہ کے سپرسٹارڈم کا دور بھلے ہی مختصر رہا ہو لیکن جتنی بے پناہ مقبولیت انھوں نے دیکھی ویسی شاید ہی کسی اور کبھی نصیب ہو۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Junior Mehmood
Image caption راجیش کھنہ کو لوگ پیار سے کاکا بھی کہتے تھے

ایک فلم کے سیٹ پر راجیش کھنہ اپنے ساتھی فنکاروں آغا اور اوم پرکاش سے خوش گپیاں کرتے ہوئے یہاں دیکھے جا سکتے ہیں۔

راجیش کھنہ کے ساتھ کئی فلموں میں بطور چائلڈ سٹار کام کرنے والے اداکار جونیئر محمود نے بتایا: ’کاکا(لوگ راجیش کھنہ کو کاکا بھی کہتے تھے) سیٹ پر کسی سے بات نہیں کرتے تھے۔ جونیئر فنکاروں اور اسسٹینٹس کی طرف تو دیکھتے تک نہیں تھے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Ashvin Thakkar
Image caption یہاں راجیش کھنہ کو مختلف دور میں دیکھا جا سکتا ہے

راجیش کھنہ کے بارے میں پریم چوپڑہ کہتے ہیں: ’یہ خیال عام ہے کہ راجیش کھنہ مغرور تھے لیکن میں ایسا نہیں مانتا۔ وہ چپکے سے لوگوں کی مدد بھی کرتے تھے اور کسی کو پتہ نہیں چلنے دیتے تھے۔‘

تاہم پریم چوپڑا کہتے ہیں: ’راجیش، بدلتے وقت کے ساتھ خود کو بدل نہیں سکے اور جو کام امیتابھ بچن نے کیا وہ راجیش کھنہ نہیں کر پائے۔ وہ اپنی پرانی کامیابی میں ہی ڈوبے رہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Anita Advani
Image caption راجیش کھنہ نے سیاست کا رخ کیا اور کانگریس کی جانب سے رکن پارلیمان بھی رہے

اپنی زندگی کے آخری کے کچھ سال راجیش کھنہ نے اپنے بنگلے آشیرواد میں انیتا اڈوانی کے ساتھ گزارے۔ انھوں نے اپنے عروج کے زمانے میں بابی کی ہیروئن ڈمپل کپاڈیہ سے شادی کی۔

انیتا نے بی بی سی کو بتایا: ’راجیش کھنہ اپنی فلمیں دیکھنا پسند نہیں کرتے تھے۔ جب میں ٹی وی پر ان کی فلم دیکھتی تو وہ ٹی وی بند کرنے کو کہتے۔ انھیں گھر بالکل صاف ستھرا پسند تھا۔ کوئی چیز بے ترتیب ہوتی تو وہ اپنا آپا کھو بیٹھتے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Junior Mehmood
Image caption پریم چوپڑہ کے مطابق راجیش کھنہ چھپ کر لوگوں کی امداد کیا کرتے تھے

برسوں تک راجیش کھنہ کے منیجر رہنے والے اشون ٹھكّر نے ہمیں ان کی مختلف تصاویرفراہم کرائيں۔ راجیش کھنہ اپنی بیٹیوں ٹوئنكل اور رنکی کھنہ کے انتہائی قریب تھے۔

ان داماد اکشے کمار کے مطابق، راجیش کھنہ کے ساتھ ان کے دوستانہ مراسم تھے۔ راجیش کھنہ کے جوانی کے دنوں کے ساتھی رضا مراد کے مطابق راجیش کھنہ نے اپنی زندگی میں نظم و ضبط سے کام نہیں لیا۔ وہ بہت ساری شراب پینے لگے تھے۔ اسی وجہ سے بے پناہ کامیابی کے بعد ان کی سٹارڈم زیادہ دیر قائم نہیں رہی۔

انھوں نے سیاست میں بھی قدم رکھا تاہم اخیر میں تنہائی کا شکار رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Junior Mehmood
Image caption راجیش کھنہ اپنے طرز کے کرتے کے لیے بھی معروف تھے

اسی بارے میں