مائیلی سائرس پر ڈومینیکن رپبلک داخلے پر پابندی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption گلو کارہ مائلی سائرس اس وقت اپنے عالمی ٹور پر ہیں۔

امریکی گلوکارہ مائیلی سائرس کو مبینہ غیر اخلاقی حرکات کی بنا پر ڈومینیکن ریپبلک نے کنسرٹ کرنے سے منع کر دیا گیا ہے۔

گلوکارہ کی جانب سے جاری کردہ شیڈول کے مطابق مائلی سائرس نے 13 ستمبر کو ڈومینیکن ریپبلک کے دارالحکومت سانٹو ڈومنیکو میں ایک کنسرٹ کرنا تھا۔ لیکن ڈومنیکین رپبلک کی حکومت نے ان کی کچھ حرکتوں کو غیر اخلاقی قرار دے کر انہیں کنسرٹ کرنے سے روک دیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ مائلی سائرس کچھ ایسی حرکتیں کرتی ہیں ’جو ڈومنیکین اخلاق اور روایات کے خلاف ہیں اور ان پر ڈومینیکن قانون کے تحت سزا دی جا سکتی ہے۔‘

مائلی سائرس کے کنسرٹ کے لیے ٹکٹوں کی فروخت جولائی سے جاری ہے اور ان کی قیمت 27 ڈالر سے لے کر 370 ڈالر تک ہے۔

ماضی میں بھی ڈومینیکن ریپبلک کی حکومت نے کئی گانوں کو عامیانہ قرار دیتے ہوئے ان پر پابندی لگائی تھی۔

ابھی تک مائلی اور نہ ہی اس کنسرٹ کے منتظمین نے اس حوالے سے کوئی تبصرہ کیا ہے۔

مائلی سائرس اس سال کے ایم ٹی وی ویڈیو میوزک ایوارڈ میں بھی شریک ہوں گی تاہم وہ وہاں پرفارم نہیں کریں گی۔

گذشتہ سال کے ایوارڈ شو میں ان کے غیر اخلاقی ’ٹورکنگ‘ ڈانس سے ایک بہت بڑا تنازعہ پیدا ہوا تھا جس پر اخبارات اور سوشل میڈیا پر ان پر شدید تنقید کی گئی تھی اور ان کی اس حرکت کو عامینہ اور بیہودہ قرار دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں