دل والے انیس سال بعد دلہنیا لے جائیں گے

تصویر کے کاپی رائٹ

سنہ 1995 میں ریلیز ہونے والی شاہ رخ خان اور کاجول کی مشہور زمانہ فلم ' دل والے دلہنيا لے جائیں گے' 19 برسوں سے مسلسل ممبئی کے مراٹھا مندر سنیما گھر میں لگی ہوئی ہے۔

لیکن اب ناظرین کی کمی کی وجہ سے سنیما ہال کے مالک نے اس فلم کو نمائش سے ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔

گزشتہ کئی برسوں سے اس فلم کا ایک شو صبح ساڑھے گیارہ بجے سے دکھایا جاتا رہا ہے۔

ممبئی کے معروف انگریزی اخبار مڈ ڈے سے بات کرتے ہوئے مراٹھا مندر کے مینیجنگ ڈائریکٹر منوج دیسائی کا کہنا تھا کہ ’ فلم کافی عرصے سے اچھا بزنس کر رہی تھی۔ لیکن گزشتہ کچھ وقت سے ٹکٹوں کی فروخت میں خاصی کمی آئی ہے۔ آئندہ دسمبر میں فلم کو جب ایک ہزار ہفتے ہو جائیں گے تب ہم اسے تھیٹیر سے ہٹا دیں گے۔‘

منوج دیسائی کے مطابق اب یہ فلم باقاعدہ طور پر ٹی وی پر بھی دکھائی جاتی ہے اس کی وجہ سے بھی اب ناظرین تھیٹر کا رخ کم کرتے ہیں۔

’دل والے دلہنیا لے جائیں گے‘ شاہ رخ خان اور کاجول کی وہ فلم ہے جس نے بالی وڈ میں ان دونوں کی جوڑی کو پروان چڑھنے کا راستہ فراہم کیا۔

اس فلم کی کامیابی کے بعد کاجول اور شاہ رخ خان کی ایک جوڑی بن گئی جس کے بعد ان دونوں اداکاروں نے کئی دوسری فلموں بھی بہترین اداکاری کی۔

یش چوپڑا کے بیٹے آدتیہ چوپڑا کی یہ پہلی فلم تھی جسے انہوں نے ہی لکھا اور ڈائریکٹ کیا تھا۔ اس فلم کو کئی اعزازات سے نوازا جا چکا ہے۔

اس فلم کا شمار بالی وڈ کی بہترین فلموں میں ہوتا ہے جس نے تفریح کے ساتھ ساتھ بہترین بزنس بھی دیا۔

اسی بارے میں