ون ڈائریکشن: ہر رکن نے 2013 میں 60 لاکھ پاؤنڈز کمائے

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption ون ڈائریکشن کے اراکین اپنے گانے ’سٹیل مائی گرل‘ کے لیے ڈینی ڈا ویٹو کے ساتھ لاس اینجلیس میں

برطانوی لڑکوں کے مشہور بینڈ ’ون ڈائریکشن‘ نے حال ہی میں جاری کیے گئے حاب کتاب کے مطابق گذشتہ سال 49 ملین ڈالر کمائے۔

ان اعدوشمار جن کا جائزہ بی بی سی کے نیوز بیٹ پروگرام نے لیا اس گروپ کے اراکین 20 سالہ ہیری سٹائلز، 21 سالہ لیام پیئن، نائل ہوران اور زین ملک اور 22 سالہ لوئس ٹوملسن نے فی کس 56 لاکھ پاؤنڈ کمائے۔

اگر اسے دیہاڑی کے حساب پر لایا جائے تو یہ ایک لاکھ 34 ہزار پاؤنڈز بنتے ہیں۔

تاہم ان اعدادوشمار میں اس بینڈ کی امریکی آمدن شامل نہیں ہے۔

ان کی آمدنی گذشتہ سال کی نسبت بہت بہتر ہے جب انہوں نے ایک کروڑ 81 لاکھ پاؤنڈز بنتے ہیں اور انہیں فی کس بیس لاکھ پاؤنڈز حاصل ہوئے تھے۔

Image caption ون ڈائریکشن کوگذشتہ ہفتے جریدے ہیٹ کے امیر ترین افراد میں شامل کیا گیا تھا

اس بینڈ کے ہر ایک رکن اپنی کمپنی 1D میڈیا لیمٹڈ کے پانچ حصوں میں سے ایک کا مالک ہے جو برطانیہ میں رجسٹرڈ ہے۔

یہ اس بینڈ کی جانب سے بنائی جانے والی چار کمپنیوں میں سے ایک ہے۔

اب تک ون ڈائریکشن نے اپنے ریکارڈز کی 45 ملین کاپیاں فروخت کی ہیں اور گذشتہ دو سالوں میں ان کے تمام ٹور مکمل طور پر بک چکے تھے۔

ان کا حالیہ گانا ’سٹیل مائی گرل‘ آفیشل چارٹ میں تیسرے نمبر پر ہے۔

لڑکوں کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ انہوں اس آمدن کا آدھا مہنگے گھر خریدنے پر خرچ کیا ہے۔

ہیری سٹائلز کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ انہوں نے 60 لاکھ ڈالر میں ایک بڑا گھر لاس اینجلس میں اور ایک گھر شمالی لندن میں خریدا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption ون ڈائریکشن نے بی بی سی میوزک کے اجرا پر خیرات کے لیے بنائے گئے گانے ’خدا ہی جانتا ہے‘ یا God only knows میں بھی خصوصی طور پر شرکت کی

زین ملک نے بھی لندن میں 22 لاکھ پاؤنڈز میں ایک گھر لندن میں، 15 لاکھ ڈالر میں ایک مکان لاس اینجلیز میں اور بریڈفورڈ میں اپنی والدہ تریشا کے لیے ایک دو لاک 80 ہزار مالیت کا گھر خریدا ہے۔

گذشتہ ہفتے اس گروپ کا نام جریدے ہیٹ کے امیر ترین افراد میں شامل کیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ گروپ نے 2010 کے برطانوی پروگرام ایکس فیکٹر میں شرکت کی تھی اور تیسرے نمبر پر رہے تھے مگر ان کی کامیابی اس سال کے فاتح میتھیو کریڈل سے بہت زیادہ رہی ہے۔

اسی بارے میں