’وولف آف وال سٹریٹ‘ سب سے زیادہ پائریٹڈ فلم

Image caption لیونارڈو ڈی کیپریو نے وولف آف وال سٹریٹ میں مرکزی کردار نبھایا تھا

نیویارک کے بدعنوان سٹاک بروکرز پر بنائی جانے والی فلم ’وولف آف وال سٹریٹ‘ سنہ 2014 میں غیرقانونی طریقے سے سب سے زیادہ ڈاؤن لوڈ کی جانے والی فلم رہی ہے۔

امریکی جریدے ہالی وڈ رپورٹر نے انٹرنیٹ پائریسی پر نظر رکھنے والی کمپنی ایکسیپیو کے حوالے سے کہا ہے کہ ڈزنی کمپنی کی کارٹون فلم ’فروزن‘ اس فہرست میں دوسرے نمبر پر رہی۔

کمپنی کے جمع شدہ اعدادوشمار کے مطابق یکم جنوری 2014 سے 23 دسمبر 2013 کے دوران وولف آف وال سٹریٹ کو تین کروڑ تین لاکھ پچاس ہزار مرتبہ ڈاؤن لوڈ کیا گیا جبکہ فروزن کے ڈاؤن لوڈ کی تعداد دو کروڑ ننانوے لاکھ انیس ہزار رہی۔

اس فہرست میں تیسرے نمبر پر آنے والی فلم خلائی ایڈونچر کی کہانی ’گریویٹی‘ تھی اسے دو کروڑ ترانوے لاکھ ستاون ہزار مرتبہ غیر قانونی طریقے سے ڈاؤن لوڈ کیا گیا۔

’وولف آف وال سٹریٹ‘ ایک سال قبل امریکہ میں ریلیز کی گئی تھی اور اس پر بےباک جنسی اور منشیات کے کھلے عام استعمال کے مناظر دکھانے پر تنقید بھی کی گئی تھی۔

تقریباً تین گھنٹے طویل اس فلم میں پانچ سو سے زیادہ مرتبہ بدکلامی کی گئی لیکن اس سب کے باوجود اسے بہترین فلم کے آسکر ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا تھا۔

2014 کے آسکر ایوارڈ کے لیے نامزد فلموں میں سے وہ فلمیں جو غیرقانونی طور پر سب سے زیادہ ڈاؤن لوڈ کی جانے والی فلموں میں شامل رہیں، 12 ایئرز اے سلیو، کیپٹن فلپس اور امریکن ہسل تھیں۔

ہالی وڈ رپورٹر کے مطابق دلچسپ بات یہ ہے کہ سنہ 2014 کے دوران سب سے زیادہ کمائی کرنے والی فلم ’گارڈین آف دی گلیکسی‘ بیس سب سے زیادہ پائریٹڈ فلموں میں شامل نہیں جو کہ اس بات کا ثبوت ہے کہ اس کے شائقین نے یہ فلم زیادہ تر سینیما میں ہی دیکھی۔

اسی بارے میں