رابن ولیمز کی جائیداد پر تنازع ہو گیا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وجہ تنازعہ ولیمز کی جانب سے اپنے دو گھروں میں ذخیرہ کی گئی کچھ اشیا ہیں۔

مرحوم مزاحیہ اداکار رابن ولیمز کی بیوہ اور بچوں کے درمیان جائیداد کا تنازع عدالت تک پہنچ گیا ہے۔

دسمبر میں سان فرانسسکو کی ایک عدالت میں جمع کرائے گئے کاغذات میں ولیمز کی بیوہ سوزن نے ان کے بچوں پر بغیر اجازت کے اشیا لینے کا الزام لگایا تھا۔

دوسری جانب ولیمز کے بچوں زیکری، زیلڈا اور کوڈی کا کہنا ہے کہ وہ اپنے والد کی وفات کے صدمے سے ابھی تک نہیں نکلے اور سوزن ان کے ٹرسٹ کے معاہدے کو تبدیل کرنے کی کوشش کر کے انھیں مزید صدمہ پہنچا رہی ہیں۔

خیال رہے کہ تنازعے کی وجہ ولیمز کے دو گھروں میں ذخیرہ کی گئی کچھ اشیا ہیں۔

سوزن ولیمز کا موقف ہے کہ جس گھر میں وہ اپنے شوہر کے ساتھ رہتی تھیں، اس کے سامان کو زیورات، یادگاری اشیا اور دیگر اشیا کی اس فہرست میں شامل نہ کیا جائے جن کے بارے میں رابن ولیمز نے کہا تھا کہ وہ ان کے بچوں کو ملنی چاہییں۔

اداکار کے بچوں نے سوزن کے موقف کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ گھروں میں موجود تمام اشیا پر ان کا حق ہے۔

جھگڑے کی وجہ بننے والی اشیا میں اداکار کی گھڑیاں اور ان کو 1998 میں ملنے والے آسکر ایوارڈ کا مجسمہ بھی شامل ہے۔

یاد رہے کہ رابن ولیمز نے پچھلے سال اگست میں اپنے گھر میں گلے میں پھندا ڈال کر خوکشی کر لی تھی۔

اسی بارے میں