سنسربورڈ کی قینچی پر انوشکا کو افسوس

تصویر کے کاپی رائٹ NH 10
Image caption فلم میں بعض پرتشدد مناظر ہیں

بالی وڈ اداکارہ انوشكا شرما کی فلم ’این ایچ 10‘ کو بھارتی سینسر بورڈ نے بالآخر ریلیز کی اجازت دے دی۔

لیکن سینسر بورڈ نےبعض مناظر اور مکالموں پر قینچی چلانے کے بعد ہی یہ اجازت دی اور اب یہ فلم اسی ہفتے ریلیز ہو رہی ہے۔

بہر حال انوشكا شرما اجازت ملنے پر مطمئن ہیں تو انھیں قینچی چلائے جانے پر قدرے افسوس بھی ہے۔

ممبئی میں اپنی فلم کے پروموشن سے وابستہ ایک پروگرام میں انوشكا نے کہا: ’اطمینان بخش بات یہ ہے کہ اب فلم ریلیز ہو رہی ہے لیکن ہمیں خوشی ہوتی اگر فلم کے سین کا ٹے نہیں جاتے۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’قینچی چلائے جانے سے ہماری فلم کی کہانی کسی طور متاثر نہیں ہوئي ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اس فلم سے انوشکا شرما فلم ساز بھی بن گئی ہیں

فلم کی کہانی ایک جوڑے کی ہے جو دہلی، ہریانہ شاہراہ پر نکلتا ہے اور اس کا سامنا مجرموں سے ہوتا ہے۔

انوشكا نے کہا: ’فلم کی زبان پر سینسر بورڈ کو اعتراض تھا حالانکہ ہماری کہانی جس علاقے پر مبنی ہے وہاں لوگ ایسی ہی زبان کا استعمال کرتے ہیں۔ ہمیں خوشی ہے کہ ہم نے ایک ایماندارانہ فلم بنائی ہے۔‘

انوشكا نے بتایا کہ ’سینسر بورڈ کو فلم کے بعض پرتشدد مناظر اور گالی گلوچ والے مکالموں اعتراض تھا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption حال ہی میں عامر خان کے ساتھ انوشکا کی فلم پی کے نے زبردست کامیابی حاصل کی ہے

عامر خان اور مہیش بھٹ نے اس معاملے پر انوشكا کی حمایت کی تھی۔

خیال رہے کہ انوشكا اس فلم میں اداکارہ کے ساتھ ساتھ پروڈیوسر بھی ہیں جبکہ فلم کے ہدایتکار نوديپ سنگھ ہیں۔

اس فلم کو بھارتی سینسر بورڈ نے ’اے‘ سرٹفیكیٹ دیا ہے اور ’اے‘ درجہ بندی بولڈ فلموں کو دی جاتی ہے جس کا مطلب ہے ’بالغوں کے لیے‘ ہے۔

اسی بارے میں