ڈیوڈ دھون اور گووندا میں ناراضگی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گووندا کا کہنا ہے کہ جب ان کا برا وقت چل رہا تھا اس وقت ڈیوڈ نے ان کا ساتھ نہیں دیا

بالی ووڈ میں اداکار گووندا اور فلم ہدایت کار ڈیوڈ دھون جیسی جوڑی کی مثال کم ہی ملےگی جس نے درجنوں فلمیں ایک ساتھ کی ہوں۔

اس اداکار اور ڈائریکٹر کی جوڑی نے ’راجا بابو‘، ’قلی نمبر 1‘، ’شعلہ اور شبنم‘، ’بڑے میاں چھوٹے میاں‘ اور ’پارٹنر‘ جیسی کئی سپر ہٹ فلمیں دیں ہیں۔

لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ جیسے گووندا اپنے دوست اور ہدایت کارڈیوڈ دھون سے سخت ناراض ہیں اور آج کل وہ کھل کر اس کا اظہار بھی کر رہے ہیں۔

گووندا نے حال ہی میں رقص پر مبنی ٹی وی شو ’ڈي آئی ڈيسپر مومس‘ کے لانچ کے موقع پر موجود صحافیوں کو بتایا کہ جب ان کا برا وقت چل رہا تھا اور ان کی فلمیں فلاپ ہو رہی تھیں، اس وقت ڈیوڈ نے ان کا ساتھ نہیں دیا۔

بات چیت بند

گووندا نے بتایا کہ گذشتہ پانچ برسوں سے ڈیوڈ کے ساتھ ان کی بات چیت تک نہیں ہورہی ہے۔

انھوں ڈیوڈ کے بارے میں کہا : ’نہیں، اب میں ڈیوڈ کے ساتھ کام کرنا نہیں چاہتا۔ مجھے لگتا ہے کہ جب آپ کے بارے میں کوئی سوچتا ہے کہ آپ ان کی فلموں کے لائق نہیں ہو یا آپ ان کے لیے بوجھ ہو تو آپ کو ان سے امید نہیں رکھنی چاہیے۔‘

گووندا نے مزید کہا ’میں سمجھتا ہوں کہ ڈیوڈ اور میرے درمیان جو محبت ہے وہ تو ہمیشہ رہے گی اور رہنا بھی چاہیے۔ آج کل ڈیوڈ اپنے بیٹے کی کامیابی کا لطف لے رہے ہیں اور ان کے لیےمیں خوش ہوں، لیکن میں ان کے ساتھ کسی فلم کے بارے میں بات نہیں کرنا چاہتا۔‘

گووندا نے ماضی میں کئی بہترین فلمیں پیش کی ہیں لیکن گذشتہ کافی دنوں سے ان کی کوئی بہت کامیاب فلم نہیں آئی ہے۔

انھوں نے پچھلی بار 2001 میں ٹی وی پر گیم شو ’جیتو چھپّرپھاڑ‘ کی میزبانی کی تھی اور اب ایک بار پھر سے وہ ایک ڈانس شو کے جج کے طور پر نظر آئیں گے۔

گووندا کے رقص اور ان کے خاص انداز کی تو پوری دنیا دیوانی ہے لیکن انہیں ڈانس شو کے جج کے طور پر دیکھنا ایک نیا اور دلچسپ تجربہ ہوگا۔

اسی بارے میں