پکاسو کی پینٹنگ نے نیلامی کا ریکارڈ توڑ ڈالا

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پابلو پکاسو کی اس تصویر میں ان کے مخصوص کیوبسٹ انداز میں کئی عریاں اور نیم عریاں عورتیں دکھائی گئی ہیں۔ یہ ان 15 تصاویر کا حصہ ہے جو ہسپانوی مصور نے 1954 تا 55 بنائی تھیں

پکاسو کی ایک پینٹنگ ’الجزائر کی عورتیں‘ نیویارک کے نیلام گھر کرسٹیز میں 17 کروڑ 93 لاکھ ڈالر میں بکنے کے بعد کسی بھی نیلامی میں فروخت ہونے والی مہنگی ترین پینٹنگ بن گئی ہے۔

نیلامی سے قبل اس پینٹنگ کی قیمت کا تخمینہ 14 کروڑ ڈالر لگایا تھا لیکن حتمی فروخت سے قبل خریداروں کے درمیان 11 منٹ تک بولیاں لگتی رہیں، جس کے بعد یہ اندازوں سے زیادہ مہنگی ثابت ہوئی۔

اس سے قبل برطانوی مصور فرانسس بیکن کی تصویر ’لوشن فروئڈ کے تین مطالعے‘ سب سے مہنگی بکنے والی تصویر تھی جس کی بولی 14 کروڑ 20 لاکھ ڈالر لگی تھی۔

پابلو پکاسو کی اس تصویر میں ان کے مخصوص کیوبسٹ انداز میں کئی عریاں اور نیم عریاں عورتیں دکھائی گئی ہیں۔ یہ ان 15 تصاویر کا حصہ ہے جو ہسپانوی مصور نے 1954 تا 55 بنائی تھیں۔

پینٹنگ کی قیمت میں کرسٹیز کا کمیشن بھی شامل ہے جو دو کروڑ 15 لاکھ ڈالر کے لگ بھگ بنتا ہے۔

ماہرین کا خیال ہے کہ اس قد زیادہ مہنگی قیمتوں کے پیچھے آرٹ میں سرمایہ کاری کا رجحان ہے۔ نیویارک کے آرٹ ڈیلر رچرڈ فائن گین کہتے ہیں: ’جب تک شرحِ سود تیزی سے نہ گرے، مجھے اس کا کوئی اختتام نظر نہیں آتا اور اس بات کا مستقبل قریب میں امکان نہیں ہے۔‘