مائیکل جیکسن کا ’نیور لینڈ‘ نیلامی کے لیے پیش کردیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ unknown
Image caption سنہ 2009 میں مائیکل جیکسن کے انتقال کے بعد یہاں بہت سی تبدیلیاں کی گئی ہیں

وال سٹریٹ جرنل کے مطابق مائیکل جیکسن کا گھر ’نیور لینڈ‘ دس کروڑ ڈالر کی قیمت کے ساتھ نیلامی کے لیے پیش کر دیا گیا ہے۔

سانتا باربرا میں واقع اس گھر میں کبھی ایک چڑیا گھر، تفریحی پارک اور اپنا ایک فائر سٹیشن ہوتا تھا۔ اب یہ وہاں نہیں رہے لیکن پھولوں کی بنی گھڑی اور ریل کی پٹری اب بھی موجود ہے۔

مائیکل جیکسن نے یہ گھر سنہ 1987 میں ایک کروڑ 96 لاکھ ڈالر میں خریدا تھا لیکن وہ اس کی قیمت چکانے میں مشکلات کا شکار رہے تھے، بعدازاں ایک سرمایہ کار کمپنی نے اسے نیلامی سے بچانے میں کردار ادا کیا تھا۔

اب اس جگہ کو سکامور ویلی رینچ کے نام سے پکارا جاتا ہے اور سنہ 2009 میں مائیکل جیکسن کے انتقال کے بعد یہاں بہت سی تبدیلیاں کی گئی ہیں۔

2800 ایکٹر پر محیط یہ جائیداد 5225 فیگوئرو ماؤنٹین روڈ پر واقع ہے اور اب مشرکہ طور پر سوتھبیز اور ہلٹن اینڈ لے لینڈ اس کی نیلامی کریں گے۔

اسٹیٹ ایجنٹوں نے مائیکل جیکسن کے گھر کی ایک جھلک دیکھنے والے مداحوں کو بھی تنبیہ کی ہے۔ وال سٹریٹ جرنل کو انھوں نے بتایا کہ اگر کوئی بھی اس جائیداد کو دیکھنے کی خواہش رکھتا ہے تو اس بات کا تعین کیا جائے گا کہ وہ اسے خریدنے کی اہلیت بھی رکھتا ہے یا نہیں۔

سوتھبیز انٹرنیشنل ریئلٹی کی سوزین پرکنس کا کہنا ہے: ’ہم یہاں دورے نہیں کروائیں گے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ unknown
Image caption ’نیور لینڈ‘ کا نام پیٹرپین کی کہانی کے ایک جزیرے سے منسوب تھا، جہاں بچے ہمیشہ بچے ہی رہتے ہیں

مائیکل جیکسن نے ’نیور لینڈ‘ سنہ 1987 میں بچوں کے لیے ایک تفریح گاہ بنانے کے عزم کے ساتھ خریدا تھا، اور ایک سال بعد وہ یہاں منتقل ہوگئے تھے۔

’نیور لینڈ‘ کا نام پیٹرپین کی کہانی کے ایک جزیرے سے منسوب تھا، جہاں بچے کبھی بڑے نہیں ہوتے۔

اس کی خریداری کے بعد مائیکل جیکسن نے یہاں ایک چڑیا گھر اور اور تفریح گاہ بنائی تھی لیکن سنہ 2006 کے بعد اس کے دروازے عوام کے لیے بند ہوگئے تھے کیونکہ وہ اپنے ملازمین کو تنخواہ دینے یا اس کی دیکھ بھال کرنے میں ناکام رہے تھے۔

اسی بارے میں