کامنی کوشل ابھی بھی ایکشن کہنے پر اداکاری نہیں بھولیں

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption کامنی کوشل کی پہلی فلم نیچا نگر تھی

سنہ 1940 اور 50 کی دہائی کی معروف بھارتی اداکارہ کامنی کوشل 88 سال کی ہیں اور ممبئی کے مالابار ہل علاقے میں رہتی ہیں۔

کسی زمانے میں ریڈیو، فلموں اور ڈراموں کی طویل سکرپٹ یاد کر لینے والی کامنی اب 10 منٹ پہلے کی جانے والی بات بھی بھول جاتی ہیں لیکن آج بھی کیمرے کے سامنے ایکشن بولتے ہی اداکاری کرنا بھولی نہیں ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption انھوں نے دلیپ کمار کے ساتھ چار فلمیں کیں اور ان کی جوڑی ہٹ تصور کی جاتی تھی

عمر نے بھلے ہی ان کے جسم اور يادداشت کو نقصان پہنچایا ہو لیکن وہ اب بھی اپنے سنہرے دنوں کو نہیں بھولی ہیں اور انھیں بھلایا بھی کیسے جا سکتا ہے کیونکہ انھی کے ساتھ پران، راج کپور اور دیو آنند جیسے اداکاروں نے اپنے فلمی کریئر کا آغاز کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption کامنی کوشل کا نام بہت سی فلموں میں ہیرو سے پہلے آیا کرتا تھا

ایسا اب کم ہی دیکھا جاتا ہے کہ کسی فلم میں اداکارہ کا نام ہیرو کے نام سے پہلے آئے لیکن 40 کی دہائی میں کامنی کوشل کی فلموں میں ان کا نام ہیرو سے پہلے آتا تھا۔

کامنی کے کریئر سے کئی ایسی چیزیں وابستہ ہیں جو پہلی بار ہوئیں اور اس میں ایک معروف گلوکارہ لتا منگیشکر کے کریئر کا آغاز ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption پران جیسے اداکار نے ان کے ساتھ اپنے فلمی کریئر کا آغاز کیا

کامنی کوشل ہی وہ اداکارہ تھی جن کے لیے لتا منگیشکر نے پہلی بار کسی لیڈ کردار کے لیے پلے بیک سنگنگ کی تھی۔

دیو آنند جو بعد میں کامنی کوشل کے اچھے دوست بنے ان کے بارے میں کامنی کہتی ہیں: ’وہ بے حد شرمیلا تھا، اتنا کہ سیٹ پر بات ہی نہیں کرتا تھا اور اس کے مداحوں کو یہ بات معلوم نہیں تھی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption دیوآنند نے بھی ان کے ساتھ اپنے کریئر کا آغاز کیا تھا

اپنے زمانے کے سدا بہار اداکار کہے جانے والے جیتندر کے بارے میں وہ کہتی ہیں: ’وہ توانائی سے بھرا ہوا تھا، جمپنگ جیک کے نام پر پورا اترتا تھا۔ جب بھی وہ ارد گرد ہوتا ماحول میں جوش رہتا تھا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption انھیں اہم اعزازات سے بھی نوازا گیا

ایک وقت ایسا آیا جب کامنی کوشل نے اداکاری سے وقفہ لے لیا اور وہ آل انڈیا ریڈیو اور بھارتی ٹیلی ویژن کے ساتھ بچوں کے لیے کٹھ پتلی اور کہانیوں کے پروگرام بنانے لگیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption بعد میں وہ بچوں کے پروگرامز میں خاصی دلچسپی لینے لگی تھیں

بچوں کے لیے ان کے پروگرام کی سیریز ’چاند ستارے‘ کو دوردرشن پر نشر کیا گیا اور ان کی بچوں کی کہانیاں ’پراگ‘ نامی میگزن میں شائع ہوئیں۔

راج کپور کی فلم ’آگ‘ میں انھوں نے نرگس کے ساتھ اہم اداکارہ کا رول ادا کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption اپنے زمانے کی وزیر اعظم اندرا گاندھی ان کی معترف تھیں

راج کپور کو یاد کرتے ہوئے وہ کہتی ہیں: ’وہ ایک شاندار شخصیت کے مالک تھے اور ان میں ایک طرح کا کرشمہ تھا جو انھیں ہیرو بناتا تھا۔‘

کپور خاندان کی قریبی لوگوں میں شمار ہونے والی کامنی کوشل نے ایک بار کھلونوں کی دکان لگائی تھی اور اداکار ششی کپور نے وہاں سے بہت سے کھلونے خریدے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ KAMINI KAUSHAL
Image caption ششی کپور نے ان کی کھلونے کی نمائش سے بہت سے کھلونے خریدے تھے

فلم ندیا کے پار کو یاد کرتے ہوئے کامنی کہتی ہیں: ’اس فلم میں مجھے ایک ساڑھی پہننی تھی جس میں میرے کندھے نظر آنے تھے، میں نے انکار کر دیا کہ یہ تو بہت ہو جائے گا لیکن پھر اپنے شوہر کے کہنے پر میں نے وہ ساڑھی پہنی۔‘

Image caption منوج کمار کو وہ اپنا سچا دوست تسلیم کرتی ہیں

کامنی کو بہت دکھ ہے کہ اب ان کی اداکاری والی ’ندیا کے پار‘ کو کوئی ٹی وی پر نہیں دکھاتا لیکن اداکار سچن والی اسی نام کی فلم کو بار بار دکھایا جاتا ہے۔

Image caption اس وقت اداکاراؤں کو اپنا شانہ دکھانا بھی منظور نہیں تھا

1946 میں اپنی پہلی فلم ’نیچا نگر‘ کے لیے كین فلم تقریب میں ممتاز گولڈن پام ایوارڈ جیتنے والی کامنی کو ان کی دوسری فلم ’براج بہو‘ کے لیے بہترین اداکارہ کا فلم فیئر ایوارڈ بھی ملا تھا۔

Image caption کامنی کوشل بعد میں ریڈیو اور ٹی وی سے منسلک ہو گئی تھیں

دلیپ کمار کے ساتھ ان کی سپر ہٹ جوڑی تھی اور انھوں نے ان کے ساتھ فلم ’آرزو‘، ’ندیا کے پار‘، ’شہید‘ اور ’شبنم‘ کی تھی۔ اس کے بعد انھوں نے منوج کمار کے ساتھ آٹھ فلمیں کیں۔

Image caption اندرا گاندھی کے سامنے پروگرام پیش کرتے ہوئے

وہ بتاتی ہیں: ’اگر آپ مجھ سے پوچھیں گے کہ انڈسٹری میں میرا کوئی دوست ہے تو میں کہوں گی جی ہاں، منوج کمار۔‘

Image caption صدر جمہوریہ ڈاکٹر ذاکر حسین سے ایوارڈ لیتے ہوئے

بھارت کی سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کے سامنے انھوں نے کئی بار اپنے فن کا مظاہرہ کیا اور اندرا گاندھی نے ان کی بچوں کی کہانیوں کو بہت سراہا۔

Image caption اب وہ 88 سال کی ہو چکی ہیں

سنہ 2015 میں فلم فیئر کی جانب سے انھیں لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ دیا گیا ہے۔

اسی بارے میں