بھارت میں ’سنسکاری جیمز بانڈ‘ کا چرچا

تصویر کے کاپی رائٹ twitter

آئیے ایک صاف ستھرے ، سگھڑ اور مہذب جیمز بانڈ سے ملیے جو ٹوئٹر پر ’سنسکاری جیمز بانڈ‘ کے نام سے بھارت میں ٹرینڈ کر رہا ہے۔

یہ ہیش ٹیگ بھارتی سینسر بورڈ کے جانب سے ڈینیئل کریگ کی فلم سپیکٹر میں بوس و کنار کے مناظر ’چھوٹے کرنے‘ پر سامنے آیا ہے۔ یہ فلم جمعرات کو بھارت میں ریلیز ہوئی ہے۔

بھارتی سینسر بورڈ کے لحاظ سے جیمزبانڈ فلم میں کچھ زیادہ ہی بوسے کرتے ہیں چنانچہ انھیں ان کی طوالت کو کم کرنا پڑا۔

سینسر بورڈ کے رکن اشوک پنڈت نے تصدیق کی ہے کہ بوس و کنار کے مناظر کو کاٹا گیا ہے، تاہم ان کا اصرار تھا کہ یہ فیصلہ بھارت کے متنازع سینسر بورڈ کے سربراہ پہلاج نہالانی نے ’ذاتی طور‘ پر لیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ twitter

انھوں نے بی بی سی ہندی کو بتایا: ’ہاں، (مناظر کاٹنے کا) فیصلہ پہلاج نہلانی نے کیا ہے۔ وہ اس طرح کے کام کرتے ہیں۔ بوس و کنار کے منظر کے علاوہ دیگر مناظر بھی کاٹے گئے ہیں۔ یہ ایک لطیفہ دکھائی دیتا ہے۔ اگر آپ جیمز بانڈ کی فلم کے ساتھ ایسا کرتے ہیں، تو پھر یہ شرمناک ہے۔‘

پہلاج نہلانی سینسر بورڈ کے سربراہ کے عہدے پر رواں سال جنوری میں سابق سربراہ لیلا سیمسن کے فلم ’میسنجرآف گوڈ‘ کی کلیئرنس کے تنازع پر مستعفی ہونے کے بعد تعینات کیے گئے تھے۔

پہلاج نہلانی نے جیمز بانڈ کی فلم اور مناظر کو مختصر کرنے کے حوالے سے کسی قسم کی رائے دینے سے انکار کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ twitter

وزیر اعظم کے خود ساختہ مداح اس وقت شہ سرخیوں میں رہے نریندر مودی کی تعریف میں ایک ویڈیو بنائی۔ اس ویڈیو کو ہندوستان ٹائمز نے تنقید کا نشانہ بنایا۔

قدامت پسند بھارت میں کھلے عام محبت کا اظہار کرنا برا سمجھا جاتا ہے اور بوسے کے سین بھارتی فلموں اور ڈراموں میں سے کاٹ دیے جاتے ہیں۔

بھارتی لوگوں نے اس فلم کو دیکھنے کے لیے تین ہفتے کا انتظار کیا اور وہ ظاہر ہے بوسوں کے سین کٹ جانے کے باعث خوش نہیں تھے۔ تاہم انھوں نے اپنا غصہ تخلیقی طور پر نکالا۔

اور اس طرح #سنسکاری جمیز بانڈ وجود میں آیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ twitter

سنسکاری کا مطب ہے اچھا رویہ رکھنے والا۔ بھارتی سوشل میڈیا نے جیمز بانڈ کو ایسا دکھانے کے لیے محنت کی۔ انھوں نے جیمز بانڈ میں اداکاراؤں کے لباس تبدیل کیے اور جیمز بانڈ کے ہیرو ڈینیئل کریگ کو بھارتی لباس میں ملبوس کیا۔

اس غصے کے باوجود کٹے ہوئے سین فلم میں دوبارہ شامل نہیں کیے جا رہے۔

لیکن بھارت کے ہمسایہ ممالک میں اس فلم کے سین نہیں کاٹے گئے۔ پاکستان میں ایک سین کٹا ہے اور وہ بیڈ روم کا سین ہے۔ لیکن سری لنکا میں یہ فلم بالکل نہیں کاٹی گئی۔

اسی بارے میں