صدر اوباما کی مہم جوئی

تصویر کے کاپی رائٹ NBC
Image caption گرِلز نے بتایا کہ صدر اوباما نے آگ جلائی، بیر کھائے اور ان کی پانی کی بوتل سے پانی پیا

ٹیلی وژن پروگرام ’رننگ وائلڈ‘ کے میزبان بیئر گرِلز کے مطابق صدر اوباما کا کہنا ہے کہ الاسکا میں ان کے ساتھ پروگرام کی فلم بندی کے دن ان کی صدارت کے بہترین دنوں میں سے ہیں۔

جنگلوں اور بیابانوں میں زندگی بسر کرنے کے ماہر بیئرگرلز نے این بی سی کے ایک شو میں صدر اوباما کے ساتھ گزارے گئے وقت کی تفصیلات بتائیں۔

’ماحولیاتی تبدیلی کا نتیجہ بھگتنے کے لیے تیار رہیں‘

گرِلز کا کہنا تھا کہ اس سفر سے صدر اوباما کی زندگی کے دوستانہ اور دلچسپ پہلو دیکھنے کو ملے۔

ماحولیاتی تبدیلی کے موضوع پر کیے گئے اس پروگرام میں یہ دونوں الاسکا کے ایگزٹ گلیشیئر پر گئے جو گھٹ رہا ہے۔

دورانِ سفر انھوں نے باپ ہونے کے احساس، خوف اور عام لوگوں سے مختلف ہونے کے احساس کے ساتھ جینے پر بات کی۔

روئٹرز کے مطابق گرِلز نے نیویارک میں صحافیوں کو بتایا کہ ’سفر کے دوران کئی بار میں نے سوچا کہ میں خود کو چٹکی کاٹوں اور سوچوں کہ کیا یہ واقعی امریکہ کے صدر ہیں۔‘

ان کا کہنا ہے کہ اس پروگرام کے لیے مرکزی خیال وائٹ ہاؤس نے پیش کیا تھا۔ اوباما پہلے صدر ہیں جو عہدے پر ہوتے ہوئے شو میں شامل ہوئے ہیں۔

’انھوں نے ہم سے رابطہ کیا اور کہا کہ الاسکا کی مہم جوئی میں صدر کو شامل کرنے کے بارے میں سوچیں۔ میں نے اس بات پر تقریباً یقین نہیں کیا۔ مجھے لگا کہ کوئی مجھے الو بنا رہا ہے۔‘

انھوں نے بتایا کہ امریکی خفیہ ایجنسی کے پچاس اہلکار، ایک خوراک چکھنے والا، ایک نشانے باز، اور ایک ہیلی کاپٹر اس مہم میں ان کے ہمراہ تھا۔

گرِلز نے بتایا کہ صدر اوباما نے آگ جلائی، بیر کھائے اور ان کی پانی کی بوتل سے پانی پیا۔

اس پروگرام کے ایک کلپ میں گرِلز اور اوباما کو ریچھ کی ادھ کھائی ہوئی جنگلی سیمن مچھلی پکا کر کھاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

بیئر گرلز نے بتایا: ’جب میں نے خون آلود ادھ کھائی مچھلی نکالی تو صدر کچھ حیران نظر آئے۔‘

یہ پروگرام امریکہ میں 17 دسمبر کو نشر کیا گیا۔

اسی بارے میں