سونو نگم کے جہاز میں گانا گانے پر تنازع

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بھارتی کی ایک فضائی کمپنی نے عملے کے پانچ ارکان کو معطل کر دیا ہے جنھوں نے گلوکار سونو نگم کو جہاز میں مسافروں سے ہم کلام ہونے والے نظام پر گانا گانے کی اجازت دی۔

اس بارے میں سماجی رابطوں کی سائٹس پر ایک بحث چھڑی ہوئی ہے۔

سونو نگم نے گذشتہ ماہ ممبئی سے جودھ پور جانے والے پرواز میں اپنے ساتھی مسافروں کے لیے اپنے کچھ مقبول گانے گائے تھے۔

فضائی کمپنبی کا کہنا ہے کہ ایک تحقیقات کے بعد اس عملے کو فلائٹ ڈیوٹی سے ہٹا دیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ ayush
Image caption سونو نگم نے گذشتہ ماہ ممبئی سے جودھ پور جانے والے پرواز میں اپنے ساتھی مسافروں کے لیے اپنے کچھ مقبول گانے گائے تھے

تاہم سونو نگم نے اس فیصلے پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’یہ تو بے وقوفی ہے۔ جب سیٹ بلیٹس بھی کھول دیے گئے ہوں اور مزید کوئی اعلان بھی نہ کیا جانا ہو ایسے میں، مجھے سے گانے کی فرمائش پر عملے کو سزا دینے کا مطلب تو یہ ہوا گویا آپ کسی کو خوشیاں پھیلانے پر سزا دے رہے ہوں۔‘

4 جنوری کو سونو نگم کی جہاز میں اس پرفارمنس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گی تھی۔

اطلاعات کے مطابق اس ماہ بھارت کی ایوی ایشن کے نگراں ادارے نے فضائی کمپنی سے کہا کہ عملے کے ارکان کو معطل کر دیا جائے اور ان کی انکوائری کروائی جائے۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق نگراں ادارے کا کہنا ہے کہ عملہ اس پرفارمنس سے اپنے فرائض سے بھٹکا اور اپنے کام سے ان کی توجہ ہٹی اور عملے کے رقص کے باعث جہاز کی اڑان میں بھی خلل پڑا۔

اخبار کے مطابق دورانِ پرواز موبائل فون کا استعمال بھی خلاف ضابطہ تھا۔

جیٹ ایئر ویز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ’جہاز کے عملے کو پروازوں سے ہٹا دیا گیا ہے اور انھیں دوبارہ ضابطے کے حوالے سے تربیت دی جا رہی ہے۔‘

جمعے کو بھارت میں ٹوئٹر پرسونو نگم ٹرینڈ کرتا رہا تھا جس میں بیشتر لوگ عملے کے ارکان کو معطل کیے جانے کے مذمت کرتے رہے۔

تاہم کئی نے فضائی کمپنی کی حمایت کی کیونکہ ان کے بقول اس عمل سے پرواز کو خطرہ لاحق ہو سکتا تھا۔

یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ دورانِ پرواز کسی پرفارمنس کی وجہ سے تنازع ہوا ہو۔ اس سے پہلے 2014 میں بھی ہولی کے تہوار پر بالی وڈ کے گانوں پر رقص کرنے کے الزام میں ایک نجی ایئر لائن کے دو پائلٹ معطل کر دیے گئے تھے۔

اسی بارے میں