احمد آباد میں شاہ رخ خان کی گاڑی پر پتھراؤ

بھارت کی ریاست گجرات کے شہر احمد آباد میں بالی وڈ کے مشہور اداکار شاہ رخ کی گاڑی پر وشوا ہندو پرشاد کے کارکنان نے پتھراؤ کیا ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق احمد آباد میں واقع ہوٹل کی پارکنگ میں وی ایچ پی کے کارکنان نے شاہ رخ کے خلاف نعرے بازی کی اور پتھراؤ کیا جس سے شاہ رخ کی گاڑی کو نقصان پہنچا۔

شاہ رخ خان آج کل احمد آباد میں اپنی نئی فلم رئیس کی عکس بندی کے لیے ہیں۔

’اب میں کچھ نہیں بولوں گا‘

پولیس کا کہنا ہے کہ جب یہ واقع پیش آیا تو فلم کا عملہ تو ہوٹل میں موجود تھا لیکن 50 سالہ شاہ رخ ہوٹل میں موجود نہیں تھے۔

وی ایچ پی نے یہ مظاہرہ شاہ رخ خان کی جانب سے بھارت میں عدم رواداری کے حوالے سے دیے گئے بیان کے خلاف کیا۔

پولیس نے اس واقعے کی ایف آئی آر کاٹ کر کم از کم سات افراد کو حراست میں لیا ہے جن کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ ان کا تعلق دائیں بازو کی جماعت وی ایچ پی سے ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر پولیس بی یو جدیجا کا کہنا ہے کہ آٹھ سے دس افراد نے ہوٹل کی پارکنگ میں پتھراؤ کیا اور بھاگ گئے۔

’جب یہ واقعہ پیش آیا تو اس وقت فلم کا عملہ تو ہوٹل میں موجود تھا لیکن خود شاہ رخ اس واقعے کے بعد احمد آباد پہنچے۔‘

وی ایچ پی کے گجرات یونٹ نے اس واقعے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ وی ایچ پی کے گجرات میں ترجمان راجو پٹیل نے کہا کہ شاہ رخ کی گاڑی پر پتھراؤ ان کے خلاف جاری مظاہرے کی کڑی ہے۔

اس سے قبل اس جماعت کے دو درجن کارکنن نے بھوج ضلع کے حکام کو ایک درخواست دی تھی جس میں ان سے استدعا کی گئی تھی کہ فلم کی عکسبندی کی اجازت منسوخ کی جائے۔

اسی بارے میں