خواتین کا پہلا بین الاقوامی فلم میلہ

Image caption بین الاقوامی وومن فلم فیسٹیول، وومن تھرو فلمز کے تحت 10 اور 11 مارچ 2017 کو ہفتہ خواتین کے اختتام پر منعقد کیا جائے گا

پاکستان میں خواتین کے مسائل کے بارے میں آگاہی پیداکرنے اور معاشرے میں عورت کے تناظر میں سماجی تبدیلیوں پر روشنی ڈالنے کے لیے پاکستان میں خواتین کا پہلا بین الاقوامی فلم فیسیٹول متعارف کرا دیا گیا ہے۔

فلم فیسیٹول کی تعارفی تقریب اسلام آباد میں وی کری ایٹ سینٹر میں منعقد ہوئی۔ اِس تقریب میں خواتین کے حقوق کے لیے سرگرم افراد اور فلم کے شعبے سے وابسطہ افراد نے شرکت کی۔

بین الاقوامی وومن فلم فیسٹیول، وومن تھرو فلمز کے تحت 10 اور 11 مارچ 2017 کو ہفتہ خواتین کے اختتام پر منعقد کیا جائے گا۔

وومن تھرو فلم کی بانی مدیحہ رضا نے بتایا کہ اِس فیسٹیول کا مقصد خواتین کی آواز اور اُن کے خیالات کو فلم سازی کے ذریعے قومی اور بین الاقوامی سطح تک پہنچانا ہے اور اِس سلسلے میں اُن کا ادارہ پورے پاکستان کے سکولوں اور کالجوں میں ورک شاپس اور سیمینار منعقد کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ اس ضمن میں نوجوان لڑکیوں کو فلم سازی کی ضروری معلومات اور تربیت فراہم کی جائے گی۔

مدیحہ رضا کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی وومن فلم فیسٹیول کے مختلف زمرہ جات اور اقسام ہیں جس میں نوجوان لڑکیاں اور خواتین حصہ لے سکتی ہیں اور اپنی فلم سازی کی صلاحیت کا مظاہرہ کر سکتی ہیں۔

Image caption وومن تھرو فلم کی بانی مدیحہ رضا نے بتایا کہ اِس فیسٹیول کا مقصد خواتین کی آواز اور اُن کے خیالات کو فلم سازی کے ذریعے قومی اور بین الاقوامی سطح تک پہنچانا ہے

اسی بارے میں