انجلینا جولی تارکینِ وطن اور پناہ گزینوں کے درمیان

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption انجلینا جولی کو دیکھنے کے لیے بڑی تعداد میں افراد جمع ہوئے

ہالی وڈ اداکارہ اور اقوام متحدہ کی خصوصی سفیر انجلینا جولی نے یونان میں پناہ گزینوں اور تارکین وطن کے عارضی کیمپوں کا دورہ کیا ہے۔

اس سے ایک روز قبل انھوں نے لبنان کی وادی بقا میں قائم اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں کے کیمپوں کا دورہ کیا تھا۔

بدھ کو اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں کے کیمپ دارالحکومت ایتھنز کے قریب پیراؤس میں واقع ہیں جہاں 4000 کے قریب پناہ گزیں اور تارکین وطن عارضی خیموں میں قیام پذیر ہیں۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق انجلینا جولی کو دیکھنے کے لیے بڑی تعداد میں افراد جمع ہوئے اور انھوں نے تالیاں بجا کر ان کا استقبال کیا۔

اس موقع پر انجلینا جولی نے بچوں سے ملاقات کی ۔ انھوں نے ایک لڑکے سے کہا کہ ’میں یہاں سیکھنے اور آپ سے بات کرنے آئی ہوں اور حکومت اور ادارے جان سکیں کہ یہاں کیا ہو رہا ہے۔‘

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں کی جانب سے جاری کردہ پیغام کے مطابق انجلینا جولی یونان کے دورہ کے دوران اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں اور یونانی حکومت کی ان کوششوں پر زور دیا ہے تاکہ بگڑتی ہوئی انسانی صورتحال سے ہنگامی طور پر نمٹا جا سکے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption ایک روز قبل انھوں نے لبنان کی وادی بقا میں قائم اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزیں کے کیمپوں کا دورہ کیا تھا

خیال رہے کہ یونان میں قائم تارکین وطن کی رجسٹریشن کے مراکز میں ہزاروں کی تعداد میں تارکین وطن اور پناہ گزیں پھنسے ہوئے جن میں ایک بڑی تعداد جنگ زدہ علاقوں سے ہے۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق انجلینا جولی نے اپنے دورے کے حوالے سے بتایا کہ ’میں حکام، پارٹنرز اور رضاکارانہ کام کرنے والوں سے حالات میں بہتری اور خطرات سے بچاؤ کے حوالے سے ملاقات کے لیے پرعزم ہوں۔‘

شام کے شہر حلب سے تعلق رکھنے والی ایک 23 سالہ خاتون نے اے ایف پی کو بتایا کہ ’میرے خیال میں انجلینا جولی کی موجودگی سے سرحد کھولنے میں کچھ مدد ملے گی۔‘

’میں ایک ماہ سے یونان میں ہوں اور میں ابھی تک سرحد کھلنے اور جرمنی جانے کا انتظار کر رہی ہوں۔‘

اسی بارے میں