فوجی رومانس کی داستان کی مقبولیت

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption اس ٹی وی سیريئل نے دیکھے جانے کے سارے ریکارڈ توڑ دیے ہیں

کورین ٹی وی ڈرامے ایشیا میں ہمیشہ سے مقبول رہے ہیں لیکن فوجی رومانس پر مبنی ڈرامہ ’ڈیسنڈینٹس آف دا سن‘ یعنی شمسی النسل نے مقبولیت کی نئي بلندیاں حاصل کی ہیں۔

اس ٹی وی ڈرامے کی ایک مداح مز دائي نے جو بیجنگ کی رہائشی ہیں بی بی سی کو بتایا ’یہ شو میرے تمام خیالی پیکروں پر پورا اترتا ہے۔ یہ مجھے اس احساس سے ہمکنار کرتا ہے جو آّپ کو اس وقت ہوتا ہے جب آپ کسی کے عشق میں گرفتار ہوں۔‘

اس ڈرامے میں ایک فوجی اور ایک سرجن کے درمیان کے رشتے کو دکھایا گيا ہے اور اس خطے میں اس کے لاکھوں مداح ہیں۔

16 قسطوں پر مبنی یہ سیريل فروری میں جنوبی کوریا کے ٹی وی پر نشر ہونا شروع ہوا تھا اور اسے چین میں بھی ویب پر دکھایا جا رہا ہے اور غیر قانونی طور پر یہ کئی دیگر علاقوں میں بھی دستیاب ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption اس میں اداکار سونگ جونگ کی نے کیپٹین کا جبکہ سرجن کا کردار سونگ ہائي کو نے ادا کیا ہے

اس میں کوریائی ڈرامے کے تمام مسالے موجود ہیں جیسے الجھے ہوئے پلاٹ، سرکردہ اداکار، شاندار محل وقوع یا لوکیشن وغیرہ۔

اس ڈارمے کے بارے میں سنگاپور کے ایک اخبار نے لکھا کہ ’اس میں ایک خاتون سرجن ہے جس کو پہلی دنیا کے مسائل ہیں اور جس کی تنخواہ فائو سٹار ہے۔ اس کے پاس ایک پراسرار شخص ہے جو اس کی زندگی کے اہم لمحات میں اسے چھوڑ کر جاتا رہتا ہے اور پھر کسی کسی موقعے پر واپس آتا رہتا ہے۔‘

فوجی تھیم جنوبی کوریا کے سماج میں اہم کردار ادا کرتا ہے اور وہاں فوجی ڈیوٹی ہر نوجوان کے لیے ضروری ہے۔

اور اسی وجہ سے چینی سرکاری اخبار پیپلز ڈیلی نے اس کی تعریف کرتے ہوئے لکھا کہ ’یہ جبری بھرتی کے لیے اچھی تشہیر ہے جس سے جنوبی کوریا کے قومی جذبے اور اشتراکی کلچر کا اظہار ہوتا ہے۔‘ اخبار نے یہ اشارہ دیا کہ چین میں بھی ایسے سیريل بننے چاہیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption اس کی تعریف جنوبی کوریا کے صدر نے بھی کی ہے

جنوبی کوریا میں اس نے مقبولیت کے تمام ریکارڈ توڑ دیے ہیں یہاں تک کہ صدر پارک گوین ہائی نے اس کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’اس سے جنوبی کوریا کی ثقافت کو پھیلنے اور سیاحت کے فروغ میں مدد ملے گی۔‘

اسی بارے میں