’بیٹ مین ورسز سپرمین‘ باکس آفس پر کامیاب

تصویر کے کاپی رائٹ WarnerBros
Image caption اس فلم میں وارنر برادرز نے کامک فلموں کے دو سپر ہیروز کو پہلی بار ایک ساتھ پیش کیا ہے جسے ان کی خوش آئند کامیابی سے تعبیر کیا جارہا ہے

فلم’بیٹ مین ورسز سپر مین: ڈان آف جسٹس‘ تمام تر برے تجزیوں کے باوجود بھی ریلیز کے پہلے پانچ دنوں میں دنیا بھر میں باکس آفس پر 42 کروڑ 40 لاکھ ڈالر کا بزنس کرنے میں کامیاب ہوگئی ہے۔

اس حساب سے ڈان آف جسٹس ہالی وڈ کی تاریخ میں مارچ کے مہینے میں ریلیز ہونے والی فلموں میں سب سے زیادہ بزنس کرنے والی چوتھی بڑی فلم بن گئی ہے۔

اس میں صرف امریکہ میں ہی 17 کروڑ ایک لاکھ ڈالر کی مالیت کے ٹکٹوں کی فروخت شامل ہے۔ اس کے ساتھ ہی اس فلم نے ریلیز کے اپنے پہلے ہفتے کے دوران سب سے زیادہ کمانے والی فلموں میں چھٹا نمبر حاصل کرلیا ہے۔

ڈان آف جسٹس نے برطانیہ میں بھی 15 کروڑ ایک لاکھ پاؤنڈ کا بزنس کیا اور وہاں بھی مارچ میں ریلیز ہونے والی فلموں میں سب سے کامیاب فلم بن گئی ہے۔

اس فلم میں وارنر برادرز نے کامک فلموں کے دو سپر ہیروز کو پہلی بار ایک ساتھ پیش کیا ہے جسے ان کی خوش آئند کامیابی سے تعبیر کیا جارہا ہے۔

حالیہ مہینوں میں وارنر برادرز کی انتہائی مہنگی فلمیں ناکامی سے دو چار ہوچکی ہیں جن میں ’جوپیٹر‘ ،’اسینڈنگ‘ اور ’پان‘ شامل ہیں۔

ڈی سی کومک کے کرداروں پر مشتمل ڈھائی کروڑ ڈالر کی لاگت سے تیار کی گئی یہ فلم وارنر برادرز کی جانب سے بنائی گئی فلموں میں ریلیز کے شروع میں ہی سب سے زیادہ بزنس کرنے والی دوسری بڑی فلم بن گئی ہے۔ اس سے قبل وارنر برادرز کی ’ہیری پوٹر اینڈ ڈیتھلی ہولوز پارٹ ٹو‘ نے اپنی ریلیز کے پہلے ہفتے میں سب سے زیادہ بزنس کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ DC Entertainment
Image caption ڈن آف جسٹس دنیا کے مختلف ممالک میں 66 مقامات کی 40،000 سکرینوں پر دکھائی گئی

بی بی سی کے مارک کرموڈ نے اس فلم کے بارے میں لکھا تھا کہ اس فلم کو دیکھ کر ’دل توڑ دینے والی مایوسی ہوئی ہے‘ جبکہ کیٹ موئیر نے ٹائمز میں لکھا تھا کہ ’سپر ہیروز کا یہ ملاپ کمپیوٹر جینیریٹڈ امیجری (کمپیوٹرگرافکس) کے الیکٹرک سوپ میں جا کر پگھل گیا ہے۔‘

وارنر برادز کے ڈسٹری بیوشن سربراہ گولڈسٹین کا کہنا تھا کہ ’فلم کے بارے میں تنقید نگاروں کے تجزیوں اور مداحوں کی دلچسپی کا کوئی ربط نہیں بن رہا۔‘

سینیئر میڈیا تجزیہ کار پال ڈرجارابیڈن کہتے ہیں کہ ’یہ ثابت ہوگیا ہے کہ فلم کا نظریہ برے تجزیوں سے زیادہ بڑا ہے۔ آگر آپ کامک کتابوں یا فلموں کے پرستار ہیں تو ایسا ممکن ہی نہیں ہے کہ آپ کامک کی دنیا کے ان دو عظیم کرداروں کے ملاپ کو دیکھنے نہ جائیں۔ فلم بینوں کو یہ فلم اپنے تجربے کے لیے ضرور دیکنھی چاہیئے۔‘

ڈن آف جسٹس دنیا کے مختلف ممالک میں 66 مقامات کی 40,000 سکرینوں پر دکھائی گئی جن میں 16 ہزار چین کی، 4242 امریکا کی، 1701 برطانیہ کی اور 1696 جنوبی کوریا کی سکرینیں شامل ہیں۔

باکس آفس تجزیہ کار جیف بوک کہتے ہیں کہ ’مداحوں کا فیصلہ سب سے درست ہوتا ہے اور انھوں نے ثابت کردیا ہے کہ یہ کردار کتنے عظیم ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ DC Entertainment
Image caption ڈان آف جسٹس ہالی وڈ کی تاریخ میں مارچ کے مہینے میں ریلیز ہونے والی فلموں میں سب سے زیادہ بزنس کرنے والی چوتھی بڑی فلم بن گئی ہے

ہدایت کار زیک سینڈر کی اس فلم میں مشہور اداکار بین افلیک نے بیٹ مین اور ہینری کاول نے سپرمین کا کردار اد کیا ہے۔

یہ فلم وارنر برادر کی جانب سے آئندہ پانچ سالوں کے دوران 10 ڈی سی کامک کرداروں پر مشتمل ریلیز کی جانے والی فلموں میں سے پہلی فلم ہے۔ ان دس فلموں میں ونڈر وومین اور فلیش بھی شامل ہیں۔

اس کے بعد سوسائڈ اٹیک اس سال اگست میں دنیا بھر کے سینماؤں میں جائے گی۔

ابھی تک دسمبرمیں ریلیز یونے والی سٹار وارز کی دی فورس اویکنز نے 52 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کے ساتھ دنیا بھر میں پہلے ہفتے کے دوران سب سے زیادہ ٹکٹوں کی فروخت کا ریکارڈ قائم رکھا ہوا ہے۔ جس میں دو کروڑ 48 لاکھ ڈالر ٹکٹ صرف امریکہ میں فروخت ہوئے تھے۔

اسی بارے میں