’جیسن بورن کے لیے باڈی بنانا انتہائی مشکل تھا‘

ہالی ووڈ اداکار میٹ ڈیمن نے تسلیم کیا ہے کہ ان کی نئی آنے والی فلم جیسن بورن کے لیے باڈی بنانا انتہائی مشکل اور محنت والا کام تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Universal
Image caption 2007 میں ریلیز ہونے والی فلم ’دی بورن الٹیمیٹم‘ کے بعد میٹ پہلی بار سی آئی اے ایجنٹ کے کردار میں نظر آئیں گے۔

2007 میں ریلیز ہونے والی فلم ’دی بورن الٹیمیٹم‘ کے بعد میٹ پہلی بار سی آئی اے ایجنٹ کے کردار میں نظر آئیں گے۔

جیسن بورن کے ٹریلر کے ریلیز کے موقع پر بی بی سی کو دیے گئے ایک انٹرویو میں میٹ جیسن کا کہنا تھا کہ پہلی ’بورن‘ فلم میں کام کرتے وقت وہ صرف 29 برس کے تھے لیکن نوجوان ہونے کے باوجود ان کا خیال تھا کہ فلم کے لیے اپنے جسم کو بنانا انتہائی محنت والا کام تھا۔

’لیکن ابھی تو میں 45 برس کا ہو چکا ہوں اور اس عمر میں باڈی بنانا تباہ کن کام ہے۔ میری پینتالیسویں سالگرہ پر ہم ننگی کہنیوں والی فائٹ کی عکسبندی کر رہے تھے جو انتھک محنت والا کام تھا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ باڈی بنانے کے لیے انہیں سخت ڈائٹ پر ہونے کے علاوہ جیم میں بھی بہت وقت گزارنا پڑا، جو کہ نہایت مشقت والا کام ہے۔

ہالی ووڈ سٹار نے مزاح کرتے ہوئے کہا کہ وہ امید رکھتے ہیں کہ آنے والے وقت میں جیسن بورن موٹے اور خوش و خرم بوڑھے ہوں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ universal
Image caption ان کا کہنا تھا کہ باڈی بنانے کے لیے انہیں سخت ڈائٹ پر ہونے کے علاوہ جیم میں بھی بہت وقت گزارنا پڑا، جو کہ نہایت مشقت والا کام ہے۔

اس فلم میں ڈیمن ایک بار پھر ’دی بورن سپرامیسی‘ اور ’دی بورن الٹیمیٹم‘ کے ڈائرکٹر پال گینگراس کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔

اس فلم کی عکسبندی برلن، لاس ویگاس، لندن اور واشنگٹن میں کی گئی ہے۔ جیسن بورن میں ٹامی لی جونز، الیسیا ویکاندر، اور وینسنٹ کیسل جلوہ گر ہو رہے ہیں۔

ڈیمن نے رواں برس آسکر کے لیے نامزد ’دی مارشن‘ میں بھی کردار ادا کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اور گرینگراس دونوں کافی عرصے سے یہ کردار ادا کرنا چاہ رہے تھے کیونکہ ان دونوں کو یہ کردار بے حد پسند ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پال اور ان کے لیے ایسی فلمیوں میں کام کرنا ان کے کیرئیر کی کامیابی میں مددگار ثابت ہوا ہے اور اسی کی بدولت انہیں مزید کام کرنے کے مواقع بھی ملے۔

’جب ہم راستے میں چل رہے ہوتے ہیں تو راہ چلتے لوگ ہمارے پاس آ کر کہتے پوچھتے ہیں کہ آپ کب دوبارہ ایسی فلمیں بنائیں گے، یہی وجہ ہے کہ ہم نے اس فلم میں کام کرنے کا فیصلہ کیا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ناظرین کا اعتماد حاصل کرنا آج کل انتہائی مشکا ہے اور اسی لیے انہوں نے اس فلم کو بنانے میں جلدی نہیں کی۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس فلم کو لوگ پسند کریں گے۔

جیسن بورن 27 جولائی کو ریلیز ہو رہی ہے۔

اسی بارے میں