یوکرین کی جمالہ یورو وژن مقابلے کی فاتح

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جمالہ اس مقابلے میں شرکت کرنے والی آج تک کی واحد کرائمیائی تاتاری ہیں اور ان کے سیاسی نغمے پر شو سے قبل ہی تنازع کھڑا ہو گیا تھا

یوکرین کی جمالہ نے رواں سال کا گائیکی کا یورو وژن مقابلہ جیت لیا ہے۔ یہ مقابلہ سویڈن کے دارالحکومت سٹاک ہوم میں منعقد ہوا تھا۔

روس کے سربراہ جوزف سٹالن کے دور حکومت میں کرائمیا میں ہونے والی نسل کشی پر مبنی گیت ’1944‘ پر یوکرین کو 534 پوائنٹس ملے۔

آسٹریلیا 511 پوائنٹس کے ساتھ دوسرے نمبر پر جبکہ فیورٹ روس 491 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر رہا۔

٭ روس، یورو وژن کے لیے یوکرینی نغمہ کا موضوع

برطانیہ کی نمائندگی کرنے والے جو اینڈ جیک کو ’یو آر ناٹ الون‘ گیت کے لیے 62 پوائنٹس ملے اور برطانیہ 24 ویں نمبر پر رہا۔

جمالہ اس مقابلے میں شرکت کرنے والی آج تک کی واحد کرائمیائی تاتاری ہیں اور ان کے سیاسی نغمے پر شو سے قبل ہی تنازع کھڑا ہو گیا تھا۔ اس میں سنہ 1944 کی جانب اشارہ کیا گیا ہے جب سٹالن نے نسل کی بنیاد پر بہت سے لوگوں کو یوکرین کے علاقے کرائمیا بھیج دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Eurovision
Image caption رواں سال سکورنگ کا نیا طریقہ متعارف کرایا گيا تھا

گلوکارہ جمالہ نے اس گیت کو اپنی پردادی کے نام منسوب کیا جنھیں ڈھائی لاکھ تاتاریوں کے ساتھ نقل مکانی پر مجبور ہونا پڑا تھا۔

اس گیت کے بارے میں خیال ظاہر کیا جا رہا تھا کہ یہ پہلے تین گیتوں میں ہوگا لیکن مقابلے کے نتیجے نے سب کو حیران کر دیا کیونکہ اس نے فیورٹ روس کو پیچھے چھوڑ دیا۔ روس نے سنہ 2014 میں کرائمیا کو یوکرین سے چھین کر اپنے ملک میں ملا لیا تھا اور وہ اس گیت کے خلاف تھا۔

ایوارڈ حاصل کرتے ہوئے فرط جذبات سے مغلوب جمالہ نے ووٹ کے لیے یورپ کا شکریہ ادا کیا اور کہا: ’میں واقعتاً امن اور ہر کسی کے لیے محبت چاہتی ہوں۔‘

اپنی جیت کے بارے میں انھوں نے بعد میں کہا: ’یہ حیرت انگیز تھا۔ مجھے یقین تھا کہ اگر آپ سچ کی بات کریں گے تو وہ لوگوں کے دلوں کو چھو جائے گی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption روس کے سرگیئی لازاریو یوروویژن جیتنے کے لیے فیورٹ قرار دیے جا رہے تھے

رواں سال پوائنٹس سکورنگ کا نیا طریقہ متعارف کرایا گیا تھا اور گذشتہ برسوں کے برخلاف ہر ملک کے جیوری اور عوام کے لیے علیحدہ علیحدہ سکور رکھا گيا تھا۔

جیوری کے ووٹوں کی بنیاد پر آسٹریلیا یوکرین سے بہت آگے تھا لیکن دامی ام کے گیت ’ساؤنڈ آف سائلنس‘ لوگوں کے دلوں کو نہ چھو سکا اور مجموعی طور پر چوتھے نمبر پر رہا۔

نئے سکورنگ سسٹم نے جیوری اور عوام کی پسند کے درمیان بڑے فرق کو واضح کیا ہے۔

اسی بارے میں