شوٹنگ کی مشکلات کا موازنہ ریپ سے کرنے پر تنقید

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فلم کی شوٹنگ کی مشکلات کا موازنہ ایک عورت کے ریپ سے کیے جانے پر انڈیا میں سوشل میڈیا پر کافی بحث ہو رہی ہے

انڈین اداکار سلمان خان ریپ کے حوالے سے اپنے ایک تبصرے کی وجہ سے مشکل میں پڑ گئے ہیں۔

ایک انٹرویو میں اپنی آنے والی فلم ’سلطان‘ کے بارے میں بات کرتے ہوئے سلمان خان نے کہا ’جب میں شوٹنگ کے بعد اکھاڑے سے باہر نکلتا تھا تو جنسی زیادتی کا شکار عورت کی طرح محسوس کرتا تھا۔ میں سیدھا نہیں چل پاتا تھا۔‘

٭ ’سلمان جو کرتے ہیں وہ ٹرینڈ بن جاتا ہے‘

٭ شوٹنگ کے دوران لنگوٹ پہننا بڑا مشکل تھا: سلمان خان

اس فلم میں سلمان خان ایک پہلوان کا کردار ادا کر رہے ہیں۔

انھوں نے کہا ’چھ گھنٹے کی شوٹنگ کے دوران اٹھانا اور پٹخنا چلتا رہا تھا۔ یہ بہت مشکل تھا۔ مجھے 120 کلو کے آدمی کو دس مرتبہ اٹھانا پڑتا اور وہ بھی دس مختلف زاویوں سے۔‘

ان کے اس انٹرویو پر فلم کی شوٹنگ کی مشکلات کا موازنہ ایک عورت کے ریپ سے کیے جانے پر انڈیا میں سوشل میڈیا پر کافی بحث ہو رہی ہے۔

صحافی راہل کنول نے ٹوئٹر پر لکھا، ’سلمان خان کو اپنا منہ سی لینا چاہیے۔ جب بھی وہ بولتے ہیں تو کچھ نہ کچھ ایسا ہی ہوتا ہے۔ ریپ سے موازنہ بہت ہی مایوس کن بات ہے۔‘

پروفیسر اے جی ايئر نے اپنی ٹویٹ میں کہا ’سلطان کے بارے میں ایک انٹرویو میں سلمان خان نے جو ریپ سے موازنہ کیا ہے، اس سے ان کی سوچ اور عورتوں کے بارے میں بےحسی واضح ہوتی ہے۔‘

اس معاملے میں کچھ لوگ موقع پر موجود صحافیوں کو بھی آڑے ہاتھوں لے رہے ہیں۔

کرشمہ نے ٹویٹ کی، ’اگر آپ سلمان کے ریپ والے تبصرے کی مذمت کرتے ہیں تو آپ کو ان صحافیوں کی بھی مذمت کرنی چاہیے جو اس بیان کے بعد کھلکھلا رہے تھے۔‘

اسیم رستوگي نے بھی کچھ ایسا ہی تبصرہ کیا کہ ’سلمان کے تبصرے میں بےحسی تھی، لیکن ان صحافیوں کا کیا جو اس پر ہنس رہے تھے؟ اس سے پتہ چلتا ہے کہ ایک معاشرے کے طور پر ہم خواتین کے بارے میں کیا سوچتے ہیں۔‘

اسی بارے میں