’سوچ سمجھ والوں کو تھوڑی نادانی دے مولا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امجد صابری کو بدھ کے روز کراچی میں لیاقت آباد کے مصروف علاقے میں موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم مسلح افراد نے گولیاں مار کر ہلاک کر دیاتھا

معروف پاکستانی قوال امجد صابری کے قتل پر ممتاز انڈین گلوکاروں نے کہا ہے کہ سنگیت محبت اور امن کا پیغام دیتا ہے جسے کسی بھی حالت میں کمزور نہیں ہونے دیا جانا چاہیے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کلاسیکل سنگیت کی ماہر گلوکارہ شبھا مدگل نے کہا کہ ’ایک فنکار اور وہ بھی ایسا فنکار جو صوفیانہ موسیقی کے سلسلے سے وابسطہ تھا اور سب تک محبت کا پیغام پہنچاتا تھا، اس کا انجام ایسا ہو یہ بہت ہی افسوس کی بات ہے۔۔۔ ان کے قاتلوں کو جلد سے جلد سزا ملنی چاہیے۔‘

معروف گلوکار کیلاش کھیر لوک سنگیت اور اپنے صوفیانہ کلام کے لیے جانے جاتے ہیں۔ کیلاش کھیر نے کہا کہ ’سنگیت کاروں اور گلوکاروں سے زیادہ معصوم برادری کسی کی نہیں۔ صوفی گائک چھچھورے گانے نہیں گاتے، وہ زیادہ تر اللہ والے گانے گاتے ہیں، وہ انسانیت کے پیغام والے گانے گاتے ہیں، محبت کی باتیں کرنے والے گانے گاتے ہیں، کوئی ان کو بھی مار سکتا ہے؟ یہ تو ایسی بات ہوگئی کہ کوئی معصوم بچے کا قتل کر رہا ہو۔‘

کیلاش کھیر نے کہا کہ ’یہ کون لوگ ہیں جو ا یسی حرکتیں کر رہے ہیں، کیونکہ انسان اگر ہوتےتو وہ ایسی حرکت نہ کرتے۔‘

انھوں نے اپنا ایک مشہور گانا گنگناتے ہوئے کہا کہ ’سوچ سمجھ والوں کو تھوڑی نادانی دے مولا‘

Image caption کیلاش کھیر نے کہا کہ ’یہ کون لوگ ہیں جو ا یسی حرکتیں کر رہے ہیں، کیونکہ انسان اگر ہوتےتو وہ ایسی حرکت نہ کرتے‘

عہد رفتہ کے مشہور اداکار رضا مراد نے کہا کہ امجد صابری کے قتل کی خبر آئی تو ’دل صدمے میں ڈوب گیا، اور یقین نہیں آرہا تھا کہ ہمیشہ اللہ کی راہ میں گانے والا اتنا اچھا فنکار کس کا کیا نقصان کر سکتا ہے؟‘

انھوں نے کہا کہ ’دنیا ان کی آواز سے محروم ہوگئی، ان کے چاہنے والوں کے لیے اس سے بڑا نقصان کیا ہوسکتا ہے؟ یہ لوگ (حملہ آور) مذہب کو سمجھتے نہیں ہیں، ان کا مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ آپ کو کیا حق حاصل ہے کسی کی جان لینے کا، ان لوگوں کو اللہ تعالی عقل دے اور صحیح راستہ دکھائے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’پہلے انھوں نے ایک سکول میں بچوں کو قتل کیا، یہ کون سا مذہب سکھاتا ہے، یہ میں ان سے پوچھنا چاہتا ہوں۔ میرا پیغام یہ ہے کہ جو چیز تم دے نہیں سکتے، اسے لینے کا تمہیں کیا حق ہے؟‘

انڈیا میں بہت سے پاکستانی فنکاروں نے عزت اور شہرت حاصل کی ہے حالانکہ ملک میں بی جے پی کی حکومت آنے کے بعد سے ماحول کچھ بدلا ہے اور گذشتہ چند مہینوں میں پاکستانی فنکاروں کو مشکلات کا سامنا رہا ہے۔ حال ہی میں غلام علی کو شدت پسندوں کی دھمکیوں کی وجہ سے اپنے کنسرٹ منسوخ کرنے پڑے تھے لیکن ان کے مداحوں کی تعداد مخالفت کرنے والوں سے کہیں زیادہ تھی۔

اسی بارے میں