ہالی وڈ میں چھوٹے رول نہیں کرونگا: نواز

Image caption نوازالدین کہتے ہیں کہ اچھے کردار ملیں تو ہالی وڈ کے بارے میں سوچ سکتا ہوں لیکن باقی فنکاروں کی طرح چھوٹے رول نہیں کروں گا

بالی وڈ کے اداکار نواز الدين صدیقی کا کہنا ہے کہ اگر انھیں اچھے کردار ملے تو وہ ہالی وڈ میں کام کرنے کے بارے میں سوچ سکتے ہوں لیکن وہاں وہ کوئی چھوٹے موٹے رول ادا نہیں کریں گے۔

حال ہی میں ریلیز ہونے والی فلم ’رمن راگھو 2.0‘ میں ’رمن‘ کا کردار کرنے والے اداکار نوازالدین نے اس بارے میں بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انوراگ کشیپ ایک اچھے ہدایتکار ہیں اور ان کے ساتھ کام کرنے سے انھیں اتنی خوشی محسوس ہوتی ہے کہ جیسے وہ دنیا کے بہترین اداکار ہوں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Spice PR

گزشتہ ہفتے ریلیز ہونے والی ان کی فلم ممبئی شہر میں ساٹھ کے عشرے کے ایک سیریل کلر ’رمن راگھو‘ کی اصل زندگی پر مبنی ہے تو اس کردار کو نبھانا ان کے لیے کیسا تھا؟

اس سوال کے جواب میں انھوں نےکہا’ایسے کردار نبھانے کے بعد آرٹسٹ ذہنی طور پر ہل جاتا ہے۔ ویسے ایسے کرداروں کو نبھانے میں پریشانی سے زیادہ مزہ بھی آتا ہے۔‘

اس طرح کے کرداروں پر فلم بنانے کے بارے میں نواز کہتے ہیں’یہ کردار بھی تو معاشرے سے ہی آتے ہیں۔ فلم میں غلط کاموں کے بعد انکا انجام دکھایا جاتا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Spice PR

ہالی وڈ میں کام کرنے سے متعلق ایک سوال پوچھے جانے پر نواز کہتے ہیں ’مجھے ہالی وڈ جانے کی ضرورت محسوس نہیں ہوتی۔ ایک اداکار کے طور پر جو کردار طور طریقوں کو سمجھاتے ہوئے وہ کہتے ہیں’اب ہالی وڈ میں پیسہ خرچ کرکے ایک ایجنٹ رکھو۔ پھر وہ ایجنٹ آپ کو چھوٹے موٹے رول دلائے گا۔ اس سے بہتر ہے کہ بادشاہ کی طرح بالی وڈ میں کام کیا جائے۔‘

اسی بارے میں