’پاکستانی فنکاروں کی فلموں کو ریلیز نہیں ہونے دیں گے‘

Image caption فواد خان نے فلم’اے دل ہے مشکل‘ میں کام کیا ہے، ان کے ساتھ ساتھ اس میں عمران عباس نے بھی مختصر رول میں نظر آئیں گے

انڈیا کی ریاست مہاراشٹر کی سخت گیر ہندو جماعت ایم این ایس یعنی مہاراشٹر نو نرمان سینا کی پاکستانی فنکاروں اور اداکاروں کو 48 گھنٹے کے اندر بھارت چھوڑنے کی دھمکی کا اثر بالی وڈ پر بھی پڑنے لگا ہے۔

اس دھمکی سے ابھی بالی وڈ سکتے میں ہی تھا کہ ایم این ایس نے بالی وڈ کے فلم سازوں اور ہدایت کاروں بھی دھمکی دے دی۔

٭ ’پاکستانی فنکار 48 گھنٹے میں انڈیا چھوڑ دیں‘

٭ ’پاکستانی گلوگاروں کو بھارت میں پرفارم کرنے نہیں دیں گے‘

ایم این ایس کا کہنا ہے کہ وہ کرن جوہر کی رواں ماہ ریلیز ہونے والی فلم ’اے دل ہے مشکل‘ اور شاہ رخ خان کی فلم ’رئیس‘ کو بھارت میں ریلیز نہیں ہونے دیں گے کیونکہ ان دونوں فلموں میں پاکستانی فنکاروں نے کام کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ ZINDAGI
Image caption ماہرہ خان نے فلم ’رئیس‘ میں شاہ رخ خان کے ساتھ کام کیا ہے

مہاراشٹر نو نرمان سینا کی جنرل سیکریٹری شالنی ٹھاکرے نے کہا’ انڈیا میں ریلیز ہونے والی وہ تمام فلمیں جس میں پاکستانی فنکاروں اور اداکاروں نے کام کیا ہے، انھیں ہم ریلیز نہیں ہونے دیں گے اور ایسی فلمیں جن کی شوٹنگ جاری ہے وہاں ہم جا کر انھیں منع کریں گے اور اگر وہ لوگ نہیں مانے تو ہمیں اس پر سخت رخ اپنانا ہوگا۔‘

فلم ’اے دل ہے مشکل‘ میں پاکستانی اداکار فواد خان کام کیا ہے جب کہ ان کے ساتھ ساتھ عمران عباس نے بھی مختصر رول میں نظر آئیں گے۔

فلم ’رئیس‘ میں پاکستانی اداکارہ ماہرا خان شاہ رخ خان کے ساتھ نظر آئیں گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Atif
Image caption کئی فلموں میں پاکستانی گلو کار عاطف اسلم اور راحت فتح علی خان نے نغمے گائے ہیں

ان اداکاروں کے علاوہ بالی وڈ میں گلوکار عاطف اسلم، راحت فتح علی خان، اداکار جاوید شیخ، علی ظفر اور عمران عباس بھی سرگرم ہیں۔

اس سے پہلے شیوسینا نے بھارت میں پاکستانی گلو کار غلام علی کے پروگرام کی مخالفت کی تھی جس کی وجہ سے ان کا پروگرام منسوخ کرنا پڑا تھا۔

سنہ 2015 میں ایم این ایس نے پاکستانی اداکارہ ماہرا خان کی فلم ’بن روئے‘ کی مہاراشٹر میں سکریننگ روک دی تھی۔

ایم این ایس کی لیڈر شالنی ٹھاکرے نے پاکستانی فنکاروں کو ہندی فلموں میں کام دینے پر فلم سازوں پر سخت نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا: ’پاکستان ہمارے ملک پر حملے کا منصوبہ پال رہا ہے، اس لیے ان فنکاروں کی فلموں کو کسی بھی قیمت پر ریلیز نہیں ہونے دیا جائے گا۔‘

بالی وڈ کی فلموں میں پاکستانی فنکاروں کا کام کرنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ پاکستانی اداکار 1980 کے عشرے سے ہی بالی وڈ میں اپنی قسمت آزمائی کرتے رہے ہیں۔

انڈین فلم انڈسٹری سے وابستہ نامور ہدایت کار مہیش بھٹ اور اداکار رضا مراد کا خیال ہے ’اگر ہم پاکستانی فنکاروں کو فلموں کے درمیان سے نکال دیں گے تو اس سے پاکستان کا کچھ نہیں بگڑےگا بلکہ اس میں بھی نقصان ہمارا ہی ہے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں