BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Friday, 05 September, 2008, 10:40 GMT 15:40 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
بم دھماکوں اور تشدد پر فلمیں
 

 
 
ممبئی ٹرین دھماکوں پر مبنی فلم’ممبئی میری جان‘ حال ہی میں نمائش کے لیے پیش ہوئی

ممبئی بم دھماکوں اور تشدد کے واقعات پر اس ہفتہ بالی وڈ میں ایک ساتھ تین فلمیں نمائش کے لیے پیش ہو رہی ہیں۔

فلم ’اے ویڈنیسڈے ‘ ممبئی ٹرین بم دھماکوں پر مبنی ہے۔ فلم ’ہائی جیک‘ شدت پسندوں کی جانب سے ایک طیارہ کو اغواء کیے جانے اور فلم’ تہان‘ کشمیر کی وادی میں رہنے والے ایک آٹھ سالہ لڑکے اور اس کی بیوہ ماں کے درد کو اجاگر کرنے والی کہانی پر مبنی ہے۔

چونکہ فلمیں سماج اور معاشرہ کی عکاس ہوتی ہیں شاید اسی لیے ان تین فلموں کے علاوہ انہی موضوعات کے ارد گرد فی الوقت بالی وڈ میں کئی فلمیں بن رہی ہیں۔ جو اس برس کے آخر تک سنیما گھروں کی زینت بننے والی ہیں۔

گیارہ جولائی سن دو ہزار چھ کو ممبئی کی لوکل ٹرین میں جو دھماکے ہوئے تھے اس نے عوامی زندگی پر بہت ہی سنگین اثرات مرتب کیے تھے اور شاید اسی لیے اس موضوع پر ایک نہیں کئی فلمیں بن رہی ہیں۔

حال ہی میں نمائش کے لیے پیش ہوئی فلم ’ممبئی میری جان‘ انہی دھماکوں کے پس منظر میں بنی فلم تھی اور اب ’اے ویڈنیسڈے ‘ میں بھی اسی موضوع کو دہرایا گیا ہے۔ فلم میں نصیرالدین شاہ کو شدت پسند کے کردار میں دکھایا گیا ہے اور انوپم کھیر نے پولس اہلکار کا کردار نبھایا ہے۔

 فلمیں سماج کا آئینہ ہوتی ہیں اور اس وقت جو حالات ہیں ان سے ہر کوئی نبرد آزما ہے۔فلمیں سماج کو پیغام دینے کا سب سے موثر ذریعہ ہیں اور یہی وجہ ہے کہ فلمساز اپنے طور پر اپنے پیغام دینے کی کوشش کر رہے ہیں
 
جاوید صدیقی، کہانی کار

ممبئی بم دھماکوں پر جو تیسری فلم بن رہی ہے اس کا نام ’دی لٹل گاڈ فادر‘ ہے۔ اس دسمبر میں یہ فلم نمائش کے لیے پیش ہو گی۔ جوئے اگسٹائن کی ہدایت میں بننے والی اس فلم کی کہانی ریلوے پلیٹ فارمز پر رہنے والے بچوں کے گرد گھومتی ہے۔ جو ان دھماکوں سے متاثر ہونے کے باوجود زخمی افراد کی مدد کرتے ہیں۔اگسٹائن نے اپنی اس فلم میں پوری لوکل ٹرین کا ڈھانچہ بنایا جسے بم سے اُڑتے دکھایا گیا ہے۔

فلم ’ کابل ایکسپریس‘ کے ہدایت کار کبیر خان اب فلم’نیو یارک‘ بنا رہے ہیں۔ اس فلم کی بھی کہانی شدت پسندی کے پس منظر میں ہے۔ فلم میں جان ابراہام بطور ہیرو ہیں اور فلم ابھی زیر تکمیل ہے۔

واضح رہے کہ جب بھی کوئی شدت پسندی کا واقعہ پیش آتا ہے تو انگلیاں مسلمان کی طرف ہی اٹھتی ہیں۔اس تاثر سے اتفاق نہ کرتے ہوئے جگ موہن منڈرا نے لندن بم دھماکوں پر ’شوٹ آن سائٹ‘ بنائی جو لندن میں ریلیز ہو چکی ہے لیکن اب ہندوستان میں نمائش کے لیے پیش ہو گی۔

منڈرا نے حال ہی میں بی بی سی سے انٹرویو کے دوران یہ بات کہی تھی کہ اس فلم کو بنانے کا ان کا مقصد لوگوں تک یہ پیغام پہچانا ہے کہ مسلمان ہونا کوئی جرم نہیں اور یہ کہ اسلام ایک امن پسند مذہب ہے۔

اسی پیغام کے ساتھ کرن جوہر فلم ’مائی نیم از خان‘ بنا رہے ہیں۔ اس فلم کے ہیرو شاہ رخ اور ہیروئین کاجول ہیں۔فلم میں نیویارک کے ورلڈ ٹریڈ سینٹر کے دھماکہ کو بتایا گیا ہے اور کہانی اسی پس منظر میں گھومتی ہے۔

کشمیر کی وادیاں ایک طویل عرصے سے خون و خرابہ اور شدت پسندی کے واقعات کی گواہ رہی ہیں۔ اس سے وادی میں عام زندگی متاثر ہے۔

ممبئی میری جان میں پریش راول کا اہم کردار تھا

فلم ’تہان‘ جو اسی ہفتہ جمعہ کے روز ریلیز ہو گی اس میں آٹھ سالہ بچے کے ذریعہ وادی کے مسائل کو پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

وادی میں خون خرابے اور مسلسل جدوجہد کی زندگی ، انہی موضوعات کو فلساز راہل ڈھولکیا نے چھونے کی کوشش کی ہے۔ وہ اپنی فلم’ لمحہ ‘ بنا رہے ہیں جس میں سنجے دت اور کنال کپور ہیں۔ڈھولکیا نے فلم کو حقیقی بنانے کے لیے وہاں کے حریت لیڈر سید علی شاہ گیلانی سے بھی اسی سلسلہ میں ملاقات کی تھی۔

کہانی کار جاوید صدیقی جو لندن بم دھماکوں کے پس منظر میں بنائی جانے والی فلم کی کہانی لکھ رہے ہیں کا کہنا ہے’ فلمیں سماج کا آئینہ ہوتی ہیں اور اس وقت جو حالات ہیں ان سے ہر کوئی نبرد آزما ہے۔فلمیں سماج کو پیغام دینے کا سب سے موثر ذریعہ ہیں اور یہی وجہ ہے کہ فلمساز اپنے طور پر اپنے پیغام دینے کی کوشش کر رہے ہیں۔‘

 
 
اسی بارے میں
مجاجن: ایک حوصلہ بخش فلم
27 March, 2006 | فن فنکار
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد