لال چوک میں فائرنگ، شہری ہلاک

پچھلے دس دن میں سرینگر کے گردونواح میں مسلح افراد کا یہ چوتھا حملہ ہے سرینگر کے تجارتی مرکز لال چوک میں تعینات نیم فوجی عملے سی آر پی ایف کے اہلکاروں اور نامعلوم مسلح افراد کے مابین فائرنگ کے واقعہ میں ایک شہری ہلاک جبکہ دو راہگیر اور دو نیم فوجی اہلکار زخمی ہوگئے۔

یہ حملہ لال چوک کے قریب مصروف ترین کُکر بازار میں منگل کی صُبح گیارہ بجکر بیس منٹ پر ہوا۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پہلے نامعلوم پستول برداروں نے سی آر پی ایف کے اہلکاروں کو نشانہ بناکر دو اہلکاروں کو زخمی کردیا اور جب وہ زخمی حالت میں بھاگنے لگے تو پھر ان کا تعاقب کیا۔

اس پر نیم فوجی اہلکاروں نے حملہ آوروں پر جوابی فائرنگ کی تاہم وہ بھیڑ کا فائدہ اُٹھاکر فرار ہوگئے۔ کراس فائرنگ میں تین شہری بھی زخمی ہوگئے جن میں سے وسطی ضلع بڈگام کے رہنے والے ایک شہری کی موت ہوگئی۔

زخمی ہونے والے کانسٹیبل وسنت کمار حالت بھی تشویشناک بتائی جاتی ہے۔

واضح رہے کہ پچھلے دس دن میں سرینگر کے گردونواح میں مسلح افراد کا یہ چوتھا حملہ ہے۔ بمنہ اور جواہرنگر علاقوں میں نامعلوم مسلح افراد نے خفیہ پولیس کے لیے کام کررہے دو نوجوانوں کو گولی مار کر ہلاک کردیا۔

بعد ازاں اتوار کو پرانے سرینگر کے پتھرمسجد علاقہ میں نامعلوم افراد نے سی آر پی ایف کی ایک گاڑی پر دستی گولہ پھینکا جسکے نتیجہ میں ایک اہلکار ہلاک ہوگیا۔

کشمیر کے پولیس سربراہ فاروق احمد نے بتایا’شدت پسندی میں بے شک کم ہوئی ہے۔ لیکن شدت پسند لوگوں میں گھل مل جاتے ہیں اور اچانک حملے کرتے ہیں۔ ہم پوری احتیاط برت رہے ہیں لیکن تمام گلی کوچوں کو سیل کرنا ممکن نہیں۔‘

اسی بارے میں