پاکستان میں شدت پسندوں کےکیمپ موجود ہیں

 اے کے اینٹونی
Image caption اے کے اینٹونی پوکھرن کے دورے پر ہیں

ہندوستان کے وزیر دفاع اے کے اینٹنی نے کہا ہے کہ پاکستان میں اس وقت شدت پسندوں کے تقریبا بیالیس کمیپس موجود ہیں اور ان کیمپوں کو تباہ کرنے کے لیے پاکستان موثر اقدامات نہیں کررہا ہے۔

گوا میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر دفاع اے کے اینٹنی نے کہا ہے کہ اس وقت '' پاکستان کی اپنی سرزمین پر شدت پسندوں کے متعدد کیمپوں کو تباہ کرنے کے لیے پاکستان نے کوئی سنجیدہ اقدامات نہیں کیے ہیں۔''

ان کا کہنا تھا '' ہماری اہم تشویش سرحد پر ان کیمپوں کی موجودگی ہے جو ممبئی حملے میں ملوث رہے ہیں۔ لیکن انہیں ختم کرنے کے لیے کچھ نہیں کیا گیا ہے۔ ''

ہندوستان اور پاکستان کے درمیان خارجہ سکریٹری سطح کی بات چیت کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی اور ديگر مسائل کے باوجود ہندوستان پاکستان کے ساتھ شدت پسندی سمیت ہر مسئلے پر بات چیت کرنے کے اپنح موقف پرقائم ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ '' ہم نے خارجہ سکریٹری کی سطح پر بات چیت کا فیصلہ سوچے سمجھے منصوبہ کے تحت کیا تھا اور ہمیں بات چیت سے کسی معجزے کی توقع بھی نہیں تھی۔ ہم نے اپنی بات پاکستان کے خارجہ سکریٹری تک پہنچا دی ہے۔''

مسٹر اینٹنی کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ساتھ بات چیت کی پیشکش کا سہرا بھی بھارت کے سر ہے۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ لائن آف کنٹرول پر پاکستان کی جانب سے دارندازی کے واقعات میں اضافہ ہورہا ہے تو انھوں نے کہا کہ اس کا مطلب صرف یہ ہے کہ کشمیر میں امن کا عمل صحیح راستے پر ہے۔

اسی بارے میں