’شعیب انڈیا سے باہر نہیں جا سکتے‘

شعیب ملک اور ثانیہ مرزا
Image caption اس ماہ کی پندرہ تاریخ کو شعیب ملک اور ثانیہ مرزا کی شادی طے پائی ہے

ہندوستان کی ریاست آندھرا پردیش کی پولیس نے عائشہ صدیقی کی شکایت پر پاکستانی کرکٹر شعیب ملک سے ثانیہ مرزا کے گھر پوچھ گچھ کی ہے۔

پولیس اہلکاروں کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ عائشہ صدیقی سے بھی پوچھ گچھ کررہی ہے۔

ادھر لاہور میں عائشہ صدیقی کے وکیل بیرسٹر فاروق حسن نے نیوز کانفرنس میں بتایا کہ وہ ثانیہ اور شعیب کی شادی رکوانا چاہتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا ’کیا کرکٹر باہر اس لیے جاتے ہیں کہ وہاں شادیاں کریں۔ ہمارا سر شرم سے جھک گیا ہے‘۔ انھوں نے کہا کہ وقت آنے پر وہ عدالت میں ضروری ثبوت فراہم کردیں گے۔

پولیس کے ایک سینیئر اہلکار ترومل را‎ نے بتایا کہ یہ معاملہ غیرملکی ہے اس لیے ان کا محکمہ پوری احتیاط سے کام کررہا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس اس بارے میں قانونی صلح مشورہ کررہی ہے کہ شعیب ملک کو گرفتار کیا جانا چاہیے یا نہیں۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ پیر کو شعیب ملک سے پوچھ گچھ کے دوران جن حقائق کا پتہ چلے گا ان پر قانونی صلح کے بعد شعیب ملک کے بعد آئندہ کی کارروائی کی جائے گی۔

فی الحال ملک کے سبھی عالمی ہوائی اڈوں اور واہگہ سرحد پر یہ احکامات جاری کردیے گئے ہیں کہ شعیب ملک کو ملک سے باہر نہ جانے دیا جائے۔

دوسری طرف مقامی میڈیا میں یہ خبریں آ رہی ہیں کہ پولیس نے شعیب ملک کا پاسپورٹ تحویل میں لے لیا ہے۔

دریں اثناء میڈیا کے مطابق پاکستان کے دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شعیب ملک بھارت میں پاکستانی ہائی کمیشن کے ساتھ رابطے میں ہیں اور ان کو مکمل مدد فراہم کی جائے گی۔

شعیب ملک کے لیے پریشانی صرف عائشہ صدیقی کے گھروالوں کی طرف سے نہیں ہے بلکہ حیدرآباد کے قاضی بھی اپنے آپ کو اس معاملے سے الگ رکھنا چاہتے ہیں۔

ثانیہ مرزا اور شعیب ملک کی اس ماہ کی پندرہ تاریخ کو شادی ہونی ہے لیکن حیدرآباد کے قاضیوں نے کہا ہے جب تک یہ تنازعہ ختم نہیں ہوجاتا ہے وہ ان دونوں کا نکاح نہیں کرائیں گے۔

اتوار کو عائشہ صدیقی نے شعیب ملک کے خلاف دھوکہ دہی، ڈرانے دھماکے اور جہیز کے لیے ہراساں کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کروایا تھا۔ عائشہ صدیقی کی جانب سے مقدمہ ان کے خاندان نے حیدرآباد دکن کے بنجارہ ہل پولیس سٹیشن میں درج کرایا تھا۔

خیال رہے کہ شعیب ملک جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب دبئی سے حیدرآباد دکن پہنچے تھے اور اس کے بعد سے وہ اپنی ہونے والی شریک حیات ثانیہ مرزا کے گھر میں ہی مقیم ہیں۔

شعیب ملک کے خلاف مقدمہ دفعہ چار سو اٹھانوے اے کے تحت درج کروایا گیا ہے۔ عائشہ صدیقی کے خاندان کی جانب سے پولیس کو عائشہ صدیقی اور شعیب ملک کے مبینہ نکاح نامے کی فوٹو کاپی بھی مہیا کی گئی ہے۔

حیدر آباد دکن میں بی بی سی کے نامہ نگار عمر فاروق کا کہنا ہے کہ عائشہ صدیقی کی جانب سے جن الزامات کے تحت مقدمہ درج کروایا گیا ہے ان میں سے بعض نا قابل ضمانت ہیں۔ انھوں نے بتایا ان الزامات کے تحت ضمانت پولیس سٹیشن کی بجائے عدالت سے حاصل کی جا سکتی ہے۔

اتوار کو شعیب ملک نے حیدر آباد دکن میں اپنے ہونے والے سسرالی گھر کے باہر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو ایک تحریری بیان تقسیم کیا، جس میں ان کی جانب سے یہ موقف اختیار کیا گیا ہے کہ انھوں نے جون دو ہزار دو میں اپنے والدین سے چھپ کر عائشہ سے ٹیلی فون پر نکاح کیا اور ایک نکاح نامے پر بھی دستخط کیے تھے۔

شعیب ملک کے بیان کے مطابق نکاح سے پہلے انھیں جس لڑکی کی تصویر دکھائی گئی تھی وہ عائشہ کی نہیں تھی۔ صدیقی خاندان کے مطالبے پر عائشہ کو طلاق دینے کے بارے میں انھوں نے کہا کہ طلاق صرف اسی صورت میں دی جا سکتی ہے جب نکاح ہوا ہو۔

شعیب ملک نے اس ضمن میں مزید بات کرنے سے گریز کرتے ہوئے کہا ہے ’یہ ایک قانونی معاملہ ہے اور ان کے وکیل ہی اس حوالے بات کریں گے۔‘

نامہ نگار کا کہنا ہے کہ شعیب ملک کی جانب سے ٹیلی فون پر نکاح اور نکاح نامے پر دستخط کرنے کا اعتراف پولیس کی تفتیش میں ان کے خلاف جا سکتا ہے۔ اس ضمن میں پولیس کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اگر کوئی درخواست آئی تھی وہ تحقیقات کریں گے۔

اس سے پہلے صدیقی خاندان نے شعیب پر ان کی بیٹی عائشہ کے ساتھ دھوکہ دہی کا الزام عائد کرتے ہوئے انہوں ایک قانونی نوٹس بھیجا تھا۔ یہ نوٹس پاکستان کے ایک وکیل فاروق حسین کے ذریعے بھیجا گیا ہے۔

جمعہ کو صدیقی خاندان نے ایک نکاح نامہ بھی جاری کیا تھا جو ان کے مطابق عائشہ اور شعیب ملک کی شادی کا ثبوت ہے۔ صدیقی خاندان کا دعویٰ ہے کہ ان کا فون پر نکاح سنہ دو ہزار دو میں ہوا تھا۔ تاہم شعیب ملک کا خاندان اس کی تردید کر رہا ہے۔ شعیب ملک کے بہنوئی عمران ظفر نے الزام عائد کیا ہے کہ صدیقی خاندان نے ان کے ساتھ دھوکہ کیا ہے۔ ’پہلے ایک خوبصورت لڑکی کی تصویر دکھائی اور بعد میں شعیب کی ملاقات ایک دوسری لڑکی سے کروائی۔‘

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس خوبصورت لڑکی کی تصویریں ان کے پاس موجود ہیں۔

اسی بارے میں