ماؤنواز سرحد پار سے ہتھیار لیتے ہیں

فائل فوٹو
Image caption منگل کی صبح ماؤنوازوں نے چھہتر سکیورٹی اہلکاروں کو ہلاک کردیا تھا

بھارت کے وزیر داخلہ پی چدامبرم نے کہا ہے کہ ماؤنواز باغی سکیوریٹی اہلکاروں کے ہتھیار لوٹنے کے علاوہ پڑوسی ممالک سے بھی ہتھیار حاصل کررہے ہیں۔ وہ یہ ہتھیار خفیہ طریقے سے ملک میں سمگل کرتے ہیں۔

سلامتی سے متعلق کابینہ کی کمیٹی کے ایک اجلاس کے بعد دلی میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے مسٹر چدامبرم نے نیپال ، برما اور بنگلہ دیش سے ملی ہوئی بھارت کی سرحد کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہاں ان کے بازار ہیں۔

ان کا کہنا تھا ’ماؤنواز سرحد پار سے ہتھیار خریدتے ہیں۔ سرحد پار ہتھیاروں کے بازار موجود ہیں۔ ماؤنواز خفیہ طریقے سے یہ ہتھیار ملک کے اندر لاتے ہیں ۔‘

انہوں نے کہا کہ منگل کو 76 سکیورٹی اہلکاروں کو ہلاک کرنے کے بعد مانوازوں ان کے ہتھیار بھی لوٹ کر اپنے ساتھ لےگئے۔

مسٹر چدامبرم نے کہا کہ منگل کو سکیورٹی اہلکاروں پر ماؤ نوازوں کے بد ترین حملے کے واقعے کی تحقیقات کی جائے گی۔’اس واقعے میں کوئی غلطی ضرور ہوئی ہے اور اس کی تحقیقات کی جائے گی اور یہ تحقیقات بہت کم وقت میں پوری کی جائے گی ۔‘

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ماؤنواز اپنی تحریک جاری رکھنے کے لیے بینک لوٹتے ہیں اور کان مالکوں سے جبری وصولی کرتے ہیں۔

اسی بارے میں