طوفان میں ہلاکتوں کی تعداد ایک سو تیس

بھارت اور بنگلہ دیش کے بعض علاقوں میں منگل کی رات کو آنے والے طوفان میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد ایک سو تیس ہو گئی ہے اور متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروئیاں جاری ہیں۔

فائل فوٹو
Image caption طوفان سے کئی اضلاع میں زبردست تباہی آئی ہے

حکام کا کہنا ہے کہ ایک سو ساٹھ کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے آنے والے طوفان میں ایک لاکھ کے قریب گھر متاثر ہوئے ہیں جس کی وجہ سے بڑی تعداد میں لوگ زخمی ہوئے یا ملبے تلے دبے ہوئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے کیونکہ بعض متاثرہ علاقوں تک رسائی ممکن نہیں ہوئی اور وہاں مواصلات کا نظام کام نہیں کر رہا ہے۔

طوفان کے بعد متاثرہ علاقوں میں ادویات اور خوراک روانہ کر دی گئی ہیں۔ طوفان میں سب سے متاثرہ بھارتی ریاست بہار میں چھہتر افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

مشرقی بنگال کا ضلع دیناجپور بھی شدید متاثرہ ہوا ہے جہاں ریاستی وزیر سری کمار مکھرجی کی نگرانی میں امداد اور بچاؤ کا کام جاری ہے۔

امدادی سرگرمیوں کے وزیر سریکمار مکھرجی نے بی بی سی کو بتایا کہ طوفان سے صرف دیناجپور میں پچاس ہزار سے زائد مکان منہدم ہو گئے ہیں جبکہ سینکڑوں لوگوں کو علاج کے لیے ہسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ مشرقی بنگال کے بعض علاقوں میں بیالیس افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ آسام میں پانچ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

اس کے علاوہ بنگلہ دیش کی ریاست رنگپور میں کم از کم سات افراد ہلاک ہوئے۔

بہار میں ایک قیدخانے کی دیوار بھی منہدم ہوگئی ہے جس کی وجہ سے چھ سو قیدیوں کو دوسری جیل میں منتقل کرنا پڑا ہے۔

مغربی بنگال میں طوفان کی زد میں آنے والے علاقوں میں رائے گنج، اسلام پور، کارندیگھی، کالیہ گنج اور ہمتاباد شامل ہیں۔ طوفان کے بعد ان علاقوں میں شدید بارش ہوئی جس سے لوگوں کی مشکلات اور بڑھ گئیں۔

اسی بارے میں