ماؤنوازوں کی ہڑتال، سات ہلاک

ہندوستان میں ماؤنواز باغیوں کی دو دن کی ہڑتال کے دوران چھتیس گڑھ، جھارکھنڈ اور اڑیسہ ریاست میں کئی جگہ حملے کیے ہیں جن میں ساتھ افراد ہلاک اور کئی کے زخمی ہوئے ہیں ۔

سیکورٹی فورسز
Image caption ماؤنواز باغیوں کی دو روزہ ہڑتال کے دوران سیکورٹی سخت ہے

ہڑتال کے دوران جھارکھنڈ میں ماؤنواز باغیوں نے ایک ریلوے سٹیشن کو نظر آتش کردیا اور ایک ریلوے ٹریک کو اڑا دیا ہے۔جبکہ چھتیس گڑھ اور اڑیسہ میں پولیس سٹیشنوں کو اڑانے کی خبریں ہیں۔

چھتیس گڑھ میں کئی مقامت پر نیم فوجی دستوں کے کمیپوں پر حملہ ہوئے ہیں جبکہ کانگریس کے ایک لیڈر کے گھر پر حملہ ہوا ہے جہاں فائرنگ میں دو سکیورٹی اہلکاروں سمیت چار افراد کے ہلاک اور دو کے زخمی ہونے کی خبر ہے۔ پولیس نے چھ نکسلیوں کو ہلاک کرنے کا دعوی کیا ہے لیکن اس خبر کی تصدیق نہیں ہوسکی ہے۔

گزشتہ روز ماؤنواز باغیوں نے اپنے سینئر رہنما چیروکری راجکمار عرف آزاد کی مبینہ پولیس تصادم میں مارے جانے کے خلاف دو دن کی ہڑتال کا اعلان کیا تھا۔مرکزی حکومت اور ریلوے نے منگل کی رات بارہ بجے شروع ہوئے بند کے دوران سخت سکیورٹی کے احکامات دیئے ہیں۔

یہ بند جمعرات کی رات بارہ بجے تک رہے گا۔

تشدد کی سب سے زیادہ خبریں چھتیس گڑھ سے ہیں۔

وہاں بستر کے دانتے واڑہ، نارائن پور، کانکیر اور بیجاپور میں کئی مقامات پر سی آر پی ایف کے کیمپس میں نکسلیوں نے گولہ باری کی ہے۔ حالانکہ اس گولہ باری میں کسی کے ہلاک ہونے کی خبر نہیں ہے۔

اسی بارے میں