ہندوستان میں افریقہ سے زيادہ غرباء

ہندوستان میں ایک غریب خاندان
Image caption یہ پہلی بار ہے جب ہندوستان میں افریقہ سے زیادہ غریب افراد ہونے کی بات کہی گئی ہے

ہندوستان کی آٹھ ریاستوں میں افریقہ کے چھبیس ممالک میں رہ رہے غرباء سے زیادہ غریب افراد رہتے ہیں۔

یہ انکشاف ایک عالمی تحقیق میں کیا گیا جس میں غربت کے ایک نئے پیمانے کو طے کیا گیا ہے۔

تحقیق کے مطابق بھارتی ریاست بہار، اترپردیش اور مغربی بنگال میں چار سو اکیس ملین غریب افراد رہتے ہیں۔

یہ تعداد افریقہ کے غریب ممالک میں رہنے والے چار سو دس ملین افراد سے زیادہ ہے۔

ملٹی ڈائمینشنل پاورٹی انڈیکس یعنی ایم پی آئی نامی اس نئے پیمانے کو آکسفورڈ یونیورسٹی کے عالمی ترقی کے شعبے نے اقوام متحدہ کے ادارے یو این ڈی پی کے ساتھ مل کر بنایا ہے۔

اس نئے انڈیکس میں ایک عام خاندان میں صحت، تعلیم پر ہونے والے خرچ کے علاوہ روزانہ گھریلو اخراجات کا جائزہ لیا جاتا ہے۔

اس نئے پیمانے کے مطابق دنیا کے ایک اعشاریہ سات ارب غریب افراد کی آبادی کا نصف جنوبی ایشیا میں آباد ہے جبکہ اس تعداد کا محض ایک چوتھائی سے ذرا زیادہ برِاعظم افریقہ میں رہتا ہے۔

.اس نئی تحقیق سے غریبی کی ایک نئی تصویر سامنے آئی ہے کیونکہ اس میں صرف روزانہ کی کمائی سے غریبی کا پیمانہ طے نہیں کیا گیا ہے۔

تحقیق کے مصنفین کا کہنا ہے کہ عالمی غربت کا یہ تفصیلی تجزیہ اب حکومتوں اور امدادی گروپوں کو دنیا کے غریب ترین افراد اور علاقوں کے لیے کام کرنے میں مدد فراہم کرے گا۔

دلی میں بی بی سی کے نامہ نگار مارک ڈرمٹ کے ایک مراسلے کے مطابق اس نئی تحقیق نے یہ ثابت کیا ہے کہ بھارت کی معیشت میں پہلے کبھی نہ دیکھی جانے والی ترقی ہونے کے باوجود بھارت میں غریب افراد کی ایک بڑی تعداد رہتی ہے۔

ان کے مطابق ان غریب افراد کی اکثریت ملک کے شمال اور مرکز میں پھیلی ایک پٹی میں آباد ہے۔

اسی بارے میں