مغربی بنگال: پانچ ماؤ نواز باغی ہلاک

ماؤنواز باغیوں کے خلاف آپریشن کی ایک فائل فوٹو
Image caption گزشتہ دنوں ہندوستان میں ماؤنواز باغیوں کے خلاف حکومت کی جانب سے کاروائی میں شدت آئی ہے

ہندوستان کی ریاست مغربی بنگال میں پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک مقابلے میں پانچ ماؤ نواز باغی ہلاک ہو گئے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اتوار اور پیر کی درمیانی شب کو جھڑپ اس وقت ہوئی جب نیم فوجی دستوں اور پولیس نے مغربی بنگال کے علاقے گوالٹور میں واقع ماؤ نواز باغیوں کے ایک کیمپ کو گھیرے میں لے لیا۔

پولیس کے مطابق گھیرے کا پتہ چلتے ہی ماؤ نواز باغیوں نے فائرنگ شروع کر دی۔۔ پولیس کے مطابق ماؤ نواز باغی پولیس کی آمد کی توقع نہیں کر رہے تھے جس کی وجہ سے فائرنگ میں ان کے پانچ ساتھی ہلاک ہو گئے۔

مدنہ پور ضلع کے پولیس چیف منوج ورما کے مطابق باغیوں کے ساتھ مقابلہ پیر کی صبح تک جاری رہا لیکن ابھی تک کوئی لاش برآمد نہیں ہو سکی ہے۔

پولیس کے مطابق عام طور پر باغی اپنے ساتھوں کی لاشیں ساتھ لے جاتے ہیں۔

منوج ورما کا کہنا تھا کہ مقابلے میں نیم فوجی دتسے کے دو اہلکار شدید زخمی بھی ہوئے ہیں۔

پولیس چیف منوج ورما کا کہنا ہے کہ مقامی دیہاتی پولیس کو زیادہ معلومات فراہم کر ہے ہیں جس کی وجہ سے پولیس کو ماؤ نواز باغیوں کے اکثریتی علاقوں میں کارروائیاں کرنے کا موقع مل رہا ہے۔

رواں ماہ کے آغاز پر بھی پولیس نے ایک مقابلے میں سات باغیوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔ یہ گزشتہ کئی ماہ کے بعد رواں ماہ میں دوسرا موقع ہے کہ پولیس ماؤ نواز باغیوں کے ٹھکانوں کے گرد گھیرا ڈالنے میں کامیاب ہوئی۔

خیال رہے کہحکومت کے مطابق نکسلی ملک کی داخلی سیکورٹی کےلیے سب سے بڑا خطرہ ہیں۔ مغربی بنگال کے علاوہ جھارکھنڈ، اڑیسہ اور چھتیس گڑھ میں نکسلی سرگرم ہیں۔

اسی بارے میں