گنگوتری جاتے ہوئے کانوڑیوں کی موت

فائل فوٹو
Image caption گنگوتری میں اس سیزن کا یہ پہلا بڑا حادثہ ہے

بھارت کی ریاست اترآنچل میں اترا کھنڈ کے علاقے میں ایک ٹرک کےگہری کھائی میں گر جانے کے سبب بیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

مرنے والے وہ سبھی وہ مسافر ہیں جو مذہبی رسومات کے لیے گنگوتری جارہے تھے۔

ساون کے مہینے میں ہندو عقیدت مندوں کی ایک بڑی تعداد گنگوتری جاتی ہے جنہیں کانوڑیا کہا جاتا ہے۔

ایک ٹرک انہیں کانوڑیوں سے بھرا ہوا گنگوتری جارہا تھا کہ راستے میں ٹرک ایک گہری کھائی میں الٹ گيا۔ ہلاک ہونے والے ان تمام کانوڑیوں کا تعلق ریاست ہریانہ سے ہے۔

اطلاعات کے متعلق پندرہ لاشیں نکالی جا چکی اور پانچ کے پانی میں بہہ جانے کی خبر ہے۔ چار افراد کو شدید چوٹیں آئی ہیں جنہیں ہسپتال میں میں بھرتی کرایا گیا ہے۔

اس بات کی تصدیق نہیں ہو پائی ہے کہ ٹرک میں کتنے لوگ سوار تھے اسی لیے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

یہ حادثہ اتر کاشی سے ستّر کلو میٹر کے فاصلے پر بھٹواڑی کے درگا مندر کے پاس پیش آیا ہے۔

زبردست طافانی بارشوں کے سبب پاڑی راستے میں بڑی مشکلیں پیش آرہی ہیں اور جگہ جگہ پہاڑ کے پتھر ٹوٹ کر راستے میں گر رہے ہیں۔

ایک عینی شاہد لوکیش تھپل پال کا کہنا ہے کہ ٹرک گنگا بھگیرتی کی ایک سو پچاس میٹرگہری کھائی میں گرا جس سے اس کے پرخچے اڑ گئے ہیں۔

ریاست اترا کھنڈ میں گزشتہ کئی روز سے زبردست بارشیں ہورہی ہیں۔ اتفاق سے یہ وقت ہے جب بڑی تعداد میں کانوڑیے گنگوتری جاتے ہیں۔

چند دنو قبل بھی بھی اسی طرح کے ایک حادثے میں بعض کانوڑیوں کی موت واقع ہو گئی تھی۔