چھتیس گڈھ: جھڑپ میں پانچ ماؤ نواز ہلاک

بھارتی فوج
Image caption جن سیکورٹی اہلکاروں کو ماؤنواز باغیوں نے گھیرا تھا وہ سبھی محفوظ ہیں

ہندوستان کی ریاست چھتیس گڈھ میں پولیس کا کہنا ہے کہ ماؤ نوازوں کے گھیراؤ میں آنے والے ایک سو ریاستی سکیورٹی اہلکار محفوظ ہیں اور اس دوران ایک جھڑپ میں پانچ باغی ہلاک ہوگئے ہیں۔

بستر ضلع کے انسپکٹر جنرل نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ پولیس کے خصوصی دستے (ایس ٹی ایف) کے جن سو جوانوں کو ماؤ نواز باغیوں نے گھیر لیا تھا وہ سب محفوظ ہیں اور اس دوران ماؤ باغی اور پولیس کے درمیان تصادم میں پانچ ماؤ نواز باغیوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

چھتیس گڈھ کے پولیس ذرائع نے بی بی سی کے نامہ نگار سلمان راوی کو بتایا تھا کہ ایس ٹی ایف کہ یہ جوان بیچلی علاقے میں نیشنل مائننگ ڈیولمپمنٹ کارپوریشن کی کان کے پاس گزشت کر رہے تھے۔ پولیس نے کہا تھا کہ جوانوں سے نا تو وائرلیس اور نہ ہی سٹلائٹ فون سے رابطہ ہو رہا تھا۔

جس وقت یہ سکیورٹی اہلکار گشت کر رہے تھے انہیں ماؤ نواز باغیوں نے گھیر لیا تھا اور اس طرح کی خبريں مل رہی تھیں کہ سکیورٹی اہلکاروں اور باغیوں کے درمیان تصادم جاری تھا۔

لیکن پولیس کا کہنا ہے کہ اس واقعہ میں سکیورٹی اہلکاروں کو کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے اور سبھی محفوظ ہیں لیکن پولیس کا دعویٰ ہے کہ تصادم میں پانچ باغی ہلاک ہوگئے ہیں۔

گزشتہ کچھ مہینوں ميں ہندوستان کی حکومت نے ماؤ نواز باغیوں کے خلاف آپریشن تیز کیا ہے وہیں ماؤ نواز باغیوں کی جانب سے بھی حملوں میں تیزی آئی ہے۔

ہندوستان کی حکومت کا کہنا ہے کہ ماؤ نواز باغی ملک کی داخلی سکیورٹی کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہیں۔

اسی بارے میں