ماؤ باغیوں کی 48 گھنٹے کی ڈیڈلائن

ماؤنواز باغی (فائل تصویر)
Image caption اغوا کیے گئے سبھی پولیس اہلکار بیجاپور ضلع کے بھدرکالی پولیس سٹیشن پر تعینات تھے

ریاست چھتیس گڑھ کے بیجاپور ضلع سے چار پولیس اہلکاروں کو اغوا کرنے کے بعد ماؤ باغیوں نے وارننگ دی ہے کہ اگر انکے مطالبات نہیں مانے گئے تو وہ انہیں مار دیں گے۔

ماؤ باغیوں نے سنیچر کی رات کو ضلع میں پرچے ڈالے ہیں جن میں یہ پیغام دیا گیا ہے کہ اگر انکے مطالبات نہیں قبول کیے گئے تو وہ پولیس اہلکاروں کو مار ڈالیں گے۔

نکسلیوں نے کہا ہےکہ جیلوں میں قید انکے ساتھیوں کو رہا کیا جائے، فرضی انکوائنٹرز کی تفتیش کی جائے اور سرکار بات چیت کی پہل کرے۔

دراصل 19 ستمبر کو نکسلیوں نے ساتھ پولیس اہلکاروں کو اغوا کیا تھا۔ اغوا کے دو دن بعد ان میں سے تین پولیس اہلکاروں کی لاشیں دیپلا علاقے کے جنگلوں میں برآمد کی گئی تھیں جبکہ چار پولیس اہلکار ابھی بھی لاپتہ ہیں۔

اغوا کیے جانے والے سبھی پولیس اہلکار بیجاپور کے بھدرکالی پولیس سٹیشن میں تعینات تھے۔

دوسری جانب جھارکھنڈ کے سارنڈا ضلع کے جنگلات میں سیکورٹی فورسز نے ماؤنواز باغیوں کے خلاف مہم شروع کی ہے جس میں تئیس اضلاع کے سپریٹنڈنٹ آف پولیس تعینات کیے گئے ہیں۔

جھارکھنڈ کے پولیس سپریٹنڈنٹ راجکمار ملک نے بتایا ہے کہ یہ مہم گزشتہ تین دنوں سے جاری اور اس میں تین پولیس اہلکار ہلاک اور نو زخمی ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں