ممبئی: اوباما کی آمد، سکیورٹی سخت

امریکہ کے صدر براک اوباما سنیچر کے روز ممبئی پہنچنے سے پہلے ان کے حفاظتی دستوں نے ان تمام مقامات کی حفاظت کے انتظامات سنبھال لیے ہیں جہاں صدر جائیں گے۔ امریکی حفاظتی دستوں کے علاوہ ممبئی پولیس، فورس ون کمانڈوز اور دیگر ریاستوں سے آئی پولیس کے علاوہ بحریہ اور ہوائی دستے بھی الرٹ پر ہیں۔

سکیورٹی اور چھان بین کا یہ عالم ہے کہ امریکی قونصل نے مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ اشوک چوان اور نائب وزیراعلیٰ چھگن بھجبل اور ریاستی وزیر داخلہ آر آر پاٹل تک سے ان کے شناختی کارڈز، پیدائش تاریخ اور پین کارڈ کی معلومات مانگی ہیں۔

اس تفتیش نے مہاراشٹر حکومت کے اعلیٰ سیاسی لیڈران اور افسران کے درمیان بدمزگی پیدا کر دی۔ چھگن بھجبل نے صدر کے ساتھ پروگرام میں شرکت کرنے پر شبہ ظاہر کیا لیکن اشوک چوان نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ ابھی اپنے آبائی علاقے ناندیڑ میں دیوالی منانے آئے ہیں اور کل ممبئی پہنچ کر وہ کسی بات کا فیصلہ کریں گے۔

ہماری نامہ نگار ریحانہ بستی والا نے بتایا کہ امریکی صدر کے ممبئی آنے کا صحیح وقت ممبئی کے پولیس کمشنر سنجیو دیال کو بھی نہیں پتہ کیونکہ ان کے مطابق سکیورٹی کے پیش نظر ان کا حفاظتی عملہ وقت میں تبدیلی کرتا رہتا ہے۔ تاہم اطلاعات کے مطابق صدر سنیچر کی دوپہر ممبئی پہنچے گے۔

ان کا طیارہ جس وقت ممبئی انٹرنشینل ایئر پورٹ پر پہنچے گا اس سے چھ منٹ پہلے اور اس کے بعد چند منٹ بعد کے لیے ایئر بیس بند کر دیا جائے گا اور تقریباً دس منٹ کے لیے تمام پروازیں معطل رہیں گی۔

ممبئی ایئر پورٹ سے مرین ون کے ہیلی کاپٹر سے صدر قلابہ میں بھارتی نیوی کے آئی این ایس شکارا پہنچیں گے جہاں سے انہیں ہوٹل تاج کے قریب پہنچایا جائے گا۔

ہوٹل تاج میں صدر کا قیام ہو گا اس لیے آج یعنی پانچ نومبر سے ہی گیٹ وے پر عام آدمی کا داخلہ بند کر دیا گیا ہے۔ گیٹ وے کی طرف آنے والے تمام گیارہ راستوں کو بند کر دیا گیا ہے۔ اطراف کی دکانیں بھی تین دنوں کے لیے بند کر دی گئی ہیں۔ سمندر میں موجود تمام کشتیوں اور جہازوں کو وہاں سے ہٹا دیا گیا ہے۔ صدر کا حفاظتی دستہ جمعرات کو ہی ممبئی پہنچ گیا تھا۔ ان کے کمانڈوز اور ڈاگ سکواڈ جگہ جگہ تلاشی لے رہے ہیں۔

اوباما کے ممبئی پہنچنے کے بعد گیٹ وے سے دو سو کلومیٹر تک پولیس کی گاڑیاں بھی پارک نہیں کی جائیں گی۔ اطراف رہنے والوں کو شناختی کارڈ دیے گیے ہیں صرف وہی کارڈ دکھا کر اس علاقے میں داخل ہو سکیں گے۔

منی بھون جہاں صدر اوباما مہاتما گاندھی کو خراج عقیدت پیش کرنے جائیں گے اسے چار نومبر سے ہی بند کر دیا گیا ہے۔ اطراف کی عمارتوں کی کاریں چند کلومیٹر دور پارک کی گئی ہیں۔ سینٹ زیویئرس کالج جہاں وہ شہر کے پانچ مختلف کالج طلباء سے ملاقات کریں گے اسے بھی امریکی سکیورٹی عملے نے سیل کر دیا ہے۔

صدر کی آمد پر کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا اور ان کے ساتھ چند پارٹیوں نے سنیچر کے روز چرچ گیٹ ریلوے سٹیشن پر شام پانچ بجے احتجاج کریں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ امریکہ نے ہندوستان کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کھلے دل سے مدد نہیں کی اور نہ ہی ڈیوڈ ہیڈلی ممبئی حملوں میں رول کی وضاحت کی۔

اسی بارے میں