مہاراشٹر کے نئے وزیر اعلی نامزد

پرتھوی راج چوہان
Image caption پرتھوی راج چوہان وفاقی کابینہ میں وزیر رہے ہیں

بھارت میں کانگریس پارٹی نے اعلان کیا ہے کہ پرتھوی راج چوہان ریاست مہاراشٹر کے نئے وزیراعلی ہوں گے۔

گزشتہ روز پارٹی نے سابق وزیر اعلی اشوک چوان کا استعفی منظور کر لیا تھا جو ’آدرش سکینڈل‘ کے متنازع معاملے کے بعد مستعفی ہوئے۔

کانگریس پارٹی کے سینیئر رہنما پرنب مکھرجی نے بدھ کو اس تقرری کا اعلان کرتے ہوئے کہا ’کانگریس کی صدر سونیا گاندھی سے گزارش کی گئی تھی کہ وہ نئے لیڈر کا انتخاب کریں، آج صبح انہوں نے پرتھوی راج چوہان کو مہاراشٹر کا نیا وزیراعلی منتخب کیا ہے۔‘

اس اعلان کے بعد نامزد وزیر اعلی پرتھوی راج چوہان نے کہا ’میں نے وزیر اعظم سے گزارش کی ہے کہ وہ مجھے مرکز میں وزارت کے عہدے سے فارغ کر دیں۔ مجھے فخر ہے کہ اس عہدے کے لیے میرا انتخاب ہوا ہے اور میں سبھی سے تعاون کی امید کرتا ہوں۔ میری کوشش ہوگی کہ میں ریاست کو اچھی قیادت مہیا کرسکوں۔‘

نامزد وزیر اعلی پرتھوی راج چوہان کا کہنا تھا کہ وہ پارلیمان سے متعلق ذمہ داریوں کو سونپنے کے بعد ممبئی جائیں گے اور پھر صلاح و مشورہ کے بعد آگے کی تیاری کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے حلیف جماعت نیشنلشٹ کانگریس پارٹی این سی پی کے رہنما شرد پوار سے بھی ملاقات کی ہے اور شام تک وہ ممبئی پہنچ جائیں گے۔

اس اعلان سے قبل پرنب مکھرجی اور وزیر دفاع اے کے اینٹنی نے ممبئی میں کانگریس کے ارکان اسمبلی سے بات چیت کی تھی۔

اس ملاقات کے بعد ارکان اسمبلی نے متحدہ طور پر ایک قرارداد منظور کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ وزیر اعلی کے انتخاب کا اختیار کانگریس کی صدر سونیا گاندھی کو دیا جاتا ہے اور وہ جسے بھی منتخب کریں گی اس کی ارکان حمایت کریں گے۔

پرتھوی راج چوہان مرکزی حکومت میں کابینہ کے رکن کے درجہ کے وزیر ہیں اور ان کی ذمہ داریاں وزیر اعظم کے دفتر سے منسلک رہی ہیں۔

ممبئی میں آدرش سوسائٹی میں مبینہ بدعنوانی کا معاملہ سامنے آنے کے بعد مہاراشٹر کے وزیر اعلی اشوک چوان نے استعفی کی پیشکش کی تھی اور ان کا استعفی کل منظور کر لیا گیا تھا۔

آدرش سوسائٹی کرگل میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کے اہل خانہ کی رہائش کے لیے تعمیر ہونی تھی جسے بعد میں بڑی عمارت میں تبدیل کر دیا گیا تھا۔

جب یہ عمارت تعمیر ہو گئی تو فوجیوں کے اہل خانہ کے بجائے اس کے زیادہ تر فلیٹ سینیئر فوجیوں، سرکاری افسروں اور سیاست دانوں کو دے دیے گئے ۔

سی بی آئی اس معاملے کی تفتیش کر رہی ہے۔

اسی بارے میں