بہار انتخابات کے آخری مرحلے میں تشدد

فائل فوٹو
Image caption بہارمیں انتخابات سخت سکیورٹی انتخابات کے درمیان ہورہے ہیں

ریاست بہار کے اسبملی انتخابات کے لیے ہفتے کو آخری مرحلے میں ووٹ ڈالے جارہے ہیں جس کے دوران ماؤ نوازباغیوں نے بم دھماکے کیے ہیں۔

پولیس حکام کے مطابق ان دھماکوں میں ایک پولیس اہلکار زخمی ہوگيا ہے۔

پٹنہ میں بی بی سی کے نامہ نگار منی کانت ٹھاکر کا کہنا ہے کہ شیرگھاٹی کے علاقے میں بارہ چٹّی اسمبلی حلقے میں یہ دھماکہ ہوا ہے۔

بہار میں پولیس کے ترجمان پی کے ٹھاکر نے بتایا ہے کہ یہ دھاکہ بارودی سرنگ سے کیا گیا جس میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس کا ایک جوان زخمی ہوگیا۔

دوسرا دھماکہ اسی حلقے میں سکھیا کے پولنگ مرکز کے پاس ہوا ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق یہاں بھی بعض افراد زخمی ہوئے ہیں۔

دو سو تینتالیس سیٹوں والی ریاستی اسمبلی کے لیے اس بار چھ مرحلوں میں انتخابات کرائے گئے ہیں۔ اس آخری مرحلے میں چھبیس نشستنوں کے لیے ووٹ ڈالے جارہے ہیں۔

اس میں تقریباً اٹھارہ حلقے ایسے ہیں جہاں ماؤنواز باغیوں کا اثر و رسوخ ہے اسی لیے سکیورٹی کے زبردست انتظامات کیے گئے ہیں۔

ماؤنواز باغیوں نے انتخابات کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے اس لیے سینٹرل ریزرو پولیس فورسز کے اضافی دستے تعینات کیے گئے ہیں۔

اٹھارہ حلقے ایسے ہیں جہاں سکیورٹی وجوہات کے سبب پولنگ کا وقت بھی کم کردیا گیا ہے اور شام پانچ بجے کے بجائے دوپہر بعد تین بجے تک ہی وہاں ووٹ ڈالے جائیں گے۔

اسی بارے میں