فون اورکمپیوٹر سے ووٹ ڈالنے کا نظام

فائل فوٹو
Image caption جنہیں قطار میں کھڑے ہونے کا وقت نہیں ہیں وہ آن لائن رجسٹریشن کروا سکتے ہیں

بھارتی ریاست مہاراشٹر کی حکومت آن لائن ووٹنگ سسٹم شروع کرنے والی ہے تاکہ وہ طبقہ جو قطار میں کھڑا رہنا پسند نہیں کرتا یا پھر جن کے پاس اتنا وقت نہیں ہے وہ اب اپنے کمپیوٹر یا موبائیل فون کے ذریعہ ووٹ ڈال سکیں۔

ریاستی انتخابی کمیشن کی طرف اس کی منظوری بھی مل گئی ہے اور حکومت نے اس سسٹم پر عملدرآمد کرنے کے لیے پانچ رکنی کمیٹی کی تشکیل کردی ہے۔

موجودہ نظام کے تحت رائے دہندگان کو پولنگ بوتھ پر قطار میں گھنٹوں کھڑے رہنا پڑتا ہے جس کی وجہ سے ضعیف، معذور افراد کو تکلیف ہوتی ہے لیکن اب وہ گھر بیٹھے ووٹ دے سکیں گے۔

ایڈیشنل چیف سکریٹری چاندگوئل کے مطابق ووٹنگ کے اس نظام کو رائج کرنے کی اہم وجہ یہ تھی کہ گاؤں میں اسّی سے پچاسی فیصد رائے دہندگان رہتے ہیں لیکن شہروں میں تعلیم یافتہ افراد کی تعداد زیادہ ہونے کے باوجود ووٹنگ کا فیصد دن بدن گرتا جا رہا ہے۔

قائم کی گئی کمیٹی میں سائبر انٹرنیٹ معاملات کے ماہر وجے مکھی کے علاوہ ایڈیشنل میونسپل کمشنر اسیم گپتا، کلیان ڈومبیولی میونسپل کارپوریشن کے کمشنر رام ناتھ سوناونے، کولہا پور میونسپل کارپوریشن کے کمشنر وجے سنگھال اور ڈائرکٹر آئی پی مہاراشٹر وجے لکشمی پرسنا شامل ہیں۔

اس سسٹم کے تحت ووٹر کو پہلے آن لائن رجسٹریشن کرانا ہوگا۔ اس کی تصدیق یہ محکمہ کریگا جس کے بعد انہیں گھر بیٹھے ووٹ دینے کا حق حاصل ہو جائے گا۔

لیکن اس نظام میں خطرات بھی ہیں۔ وجے مکھی کے مطابق انہیں خطرہ موبائل سسٹم سے ہے کیونکہ اسے آسانی کے ساتھ ہیک کیا جا سکتا ہے اور اس کے بوگس صارفین کو بھی روکنا مشکل امر ہے لیکن کمپیوٹر سسٹم زیادہ محفوظ ہے۔

مکھی کے مطابق یہ سافٹ ویئر سنہ دو ہزار گیارہ کے آخر تک مکمل ہو جائے گا۔

اس ای ووٹنگ کے ذریعہ الیکشن سب سے پہلے سن دو ہزار بارہ کے میونسپل الیکشن میں ہوں گے۔ فروری میں ریاست کے چودہ میونسپل کارپوریشن اور اٹھائیس کاؤنسل کے الیکشن ہوں گے۔

ہندوستان میں اپنے طرز کا یہ پہلا آن لائن ووٹنگ سسٹم ہوگا۔ تاہم آسٹریلیا، بیلجیئم، یورپی ممالک اور کینڈا میں یہ نظام رائج ہے۔