یوم آزادی پر کشمیر میں ’سائبر جام‘

کشمیر میں سیکورٹی
Image caption یوم آزادی کے موقع پر کشمیر میں سخت سیکورٹی ہے

بھارت کے زیرانتظام کشمیر کی مقامی حکومت نے بھارت کے یوم آزادی کی تقریبات کے موقع پر وادی میں سیل فون اور انٹرنیٹ کی سہولیات معطل کر دی ہیں۔

مقامی پولیس کے شعبۂ سکیورٹی کے سربراہ نوین اگروال نے بی بی سی اردو کے ریاض مسرور کو بتایا ہے کہ ’ماضی میں شدت پسندوں نے موبائل فون کے ذریعہ دھماکے کیے ہیں اس لیے ہم نےاحتیاط کے طور یہ قدم اُٹھایا ہے‘۔

بستیوں کی ناکہ بندی اور بھارتی یوم آزادی سے متعلق تقریبات کےمقامات کے گرد آمدورفت پر پابندی کے ساتھ ساتھ انٹرنیٹ اور سیل فون کی سہولت کی معطلی سے لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

قابل ذکر ہے کشمیر میں فی الوقت ائر ٹیل، بی ایس این ایل، ائرسیل، ووڈا فون اور ریلائنس جیسی کمپنیوں کے کم از کم چالیس لاکھ گاہک ہیں۔

سماجی کارکن عبدالقیوم شاہ نے بتایا، ’ کشمیر میں پندرہ اگست ہو یا چھبیس جنوری (بھارت کا یوم جمہوریہ)، یہاں تو تناؤ ہوتا ہے۔ تشدد بھی ہوتا ہے اور گرفتاریاں بھی۔ ایسے میں لوگوں کو ایک دوسرے کے ساتھ رابطہ کی ضرورت ہوتی ہے۔ لیکن رابطوں پر بھی پابندی عائد کی جاتی ہے۔ اس دن کو ہمیں لگتا ہے ہم قید میں ہیں‘۔

دریں اثنا علیٰحدگی پسندوں کی کال پر پیر کو پوری وادی میں مکمل ہڑتال کی گئی اور سرکاری تعطیل اور ہڑتال کی وجہ سے تعلیمی اور کاروباری سرگرمیاں ٹھپ ہوگئیں۔

کشمیر میں یومِ آزادی کی سب سے بڑی تقریب سرینگر کے بخشی سٹیڈیم میں ہوئی۔

بھارتی پرچم لہرانے کے بعد وزیراعلیٰ عمرعبداللہ نے پریڈ سے سلامی لی۔ انہوں نے اپنی تقریر میں کہا کہ ’سرنکوٹ ، سوپور یا کولگام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی غیرجانبدارانہ تفتیش کی جا رہی ہے۔ ہم قصور واروں کو سزا دیں گے، لیکن اس کے لیے امن ضروری ہے۔ لوگ مجھے تعاون دیں تو یہ سب ممکن ہوگا‘۔

اس دوران کوئی پرتشدد واقعہ پیش نہیں آیا۔ یاد رہے پچھلے سال اسی تقریب کے دوران بانڈی پورہ ضلع کے ایک پولیس اہلکار احد جان نے عمرعبداللہ پر جوتا پھینکا تھا۔

واضح رہے مقامی حکومت نے بھارت کے یوم آزادی کے موقع پر بچوں کے رنگارنگ پروگرام منعقد کرنے پر پابندی عائد کردی تھی، لہٰذا اس مرتبہ بچوں کے فنی مظاہرے کے پروگرام منعقد نہیں ہوئے۔ علیحدگی پسندوں نے اس اقدام کو سراہا ہے لیکن بھارتیہ جنتا پارٹی نے حکومت کے اس اقدام پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔

اسی بارے میں